بلوچستان اسمبلی ہنگامہ،16اپوزیشن اراکین کیخلاف ایف آئی آر درج

حکومت بلوچستان نے اسمبلی میں توڑ پھوڑ ہنگامہ آرائی کرنے کے خلاف بجلی روڑ تھانے میں قائد حزب اختلاف ملک سکندر ایڈوکیٹ سمیت 16اراکین اسمبلی کے خلاف دفعہ 144کی خلاف ورزی سمیت دیگر15 دفعات کے تحت مقدمہ درج کر لیا۔جبکہ 200سے ڈھائی سو اپوزیشن جماعتوں کے کارکنان کے خلاف ان کی شناخت آنے پر مقدمہ درج کیا جائے گا، تفصیلات کے مطابق ہفتے کو بجلی گھر روڑ پولیس تھانے میں پولیس کی مدعیت میں ایس ایچ او بجلی روڑ محمد ناصر کی مدعیت میں قائد حزب اختلاف ملک سکندر ایڈووکیٹ، احمد نواز، اختر حسین لانگو، ثناء بلوچ ،شکیلہ دیوار، واحد صدیقی، حمل کلمتی، عزیز آغا، نصیر شاہوانی، نصراللہ زیرے، اکبر مینگل ،اصغر ترین، حاجی نواز کاکڑ ،شام لال، بابو رحیم مینگل،مولوی نوراللہ، زابد ریکی کے خلاف دفعہ 144، دفعہ 324،337ق اے ڈی ایف 188، 504،506,427,268,269,270,342,341,186,353,149,147,ت ف کا ارتکاف کیا ہے ایف آئی آر میں پولیس نے مزید موقف اختیار کرتے ہوئے کہا کہ یہ حملہ آور ہوکر گالم گلوچ تشدد، شدید زخمی اور سنگین جانی نقصان کی دھمکیاں اور روڑ بلاک کرکے مزاحمت بے جا کرتے رہے جس کے تحت متحدہ اپوزیشن اراکین کے خلاف مقدمہ درج کئے گئے ہیں ایف آئی آر میں کہا گیا ہے کہ متحدہ اپوزیشن کے اراکین نے زبردستی اسمبلی کی دیوار پلانگ کر ہنگامہ آرائی ٹوڑ پھوڑ اور پولیس اہلکار پر حملہ آور ہوئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں