سینیٹر شیری رحمان کا بڑھتے ہوئے تجارتی خسارے پر تشویش کا اظہار

ااسلام آباد:پاکستان پیپلز پارٹی کی نائب صدر سینیٹر شیری رحمان نے بڑھتے ہوئے تجارتی خسارے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ امپورٹس 63 فیصد بڑھ کر 39.91 بلین ڈالر تک پہنچ گئی ہیں، آگے روپے کی قدر میں مزید کمی ہوگی،اس پر احتساب کے ادراے بھی خاموش رہے، معیشت پر ناکام تجربے اب بند ہونے چاہئے۔اپنے بیان میں شیری رحمن نے کہاکہ پی ٹی آئی حکومت نے ناکامی کا ایک اور ریکارڈ قائم کر دیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ مالی سال کے پہلے 6 ماہ کا تجارتی خسارہ 24.79 بلین ڈالر تک پہنچ گیا ہے۔انہوں نے کہاکہ ایکسپورٹس میں 14کروڑ 20لاکھ ڈالر کمی ریکارڈ کی گئی۔ انہوں نے کہاکہ امپورٹس 63 فیصد بڑھ کر 39.91 بلین ڈالر تک پہنچ گئی ہیں، آگے روپے کی قدر میں مزید کمی ہوگی۔انہوں نے کہاکہ صرف 6 ماہ میں ملک کے تجارتی خسارے میں 100فیصد اضافہ قابل تشویش ہے۔ انہوں نے کہاکہ گندم اور چینی ایکسپورٹ کر کے امپورٹ کی گئی۔ شیری رحمن نے کہاکہ اس پر احتساب کے ادراے بھی خاموش رہے، شیری رحمان نے کہاکہ ایک طرف تجارتی خسارے میں اضافہ ہو رہا ہے، دوسری طرف حکومت ایکسپورٹس بڑھنے کا دعوہ کر رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ معیشت پر ناکام تجربے اب بند ہونے چاہئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں