پاکستانی پاسپورٹ مسلسل تیسرے سال بھی بدترین پاسپورٹ کی فہرست میں شامل

کراچی:ہینلے پاسپورٹ انڈیکس کی رپورٹ میں پاکستانی پاسپورٹ مسلسل تیسرے سال بھی بدترین پاسپورٹ کی فہرست میں شامل ہے۔رپورٹ کے مطابق ہینلے پاسپورٹ انڈیکس، جو دنیا بھر کے پاسپورٹس کی رینکنگ کرتا ہے، نے پاکستان کو 108ویں نمبر پر رکھا ہے۔ہینلے پاسپورٹ انڈیکس، 2006 سے پاسپورٹس کی نگرانی کررہا ہے جو دنیا میں سفر کے لیے بہترین ہیں۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ کووڈ19 کی وجہ سے دنیا بھر میں لگنے والی سفری پابندیوں کے باعث 16 سالہ تاریخ میں انڈیکس میں وسیع خلا پیدا ہوا ہے۔انڈیکس کے مطابق جاپان اور سنگاپور کے پاسپورٹ کو 192 مقامات پر ویزا فری انٹری کی سہولت موجود ہے جبکہ افغانستان کو صرف 26 ممالک میں ایڈوانس ویزا کے تحت داخلے کی سہولت موجود ہے۔انڈیکس میں مزید نیچے کی جانب جائیں تو جاپان اور سنگاپور 192 مقامات پر ویزا کی سہولت کے ساتھ پہلے، جرمنی اور جنوبی کوریا 190 مقامات پر ویزا کی سہولت کے ساتھ دوسرے، فن لینڈ اٹلی، اسپین، لکسمبرگ 189کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہے، اس کے بعد آسٹریا، ڈینمارک، فرانس، نیدرلینڈز اور سوئیڈن188 کے ساتھ چوتھے نمبر پر ہیں۔دوسری جانب دنیا کے بدترین پاسپورٹ کی فہرست میں شمالی کوریا39 کے ساتھ 104، نیپال اور فلسطین 37کے ساتھ 105، صومالیہ 34کے ساتھ 106، یمن 33کے ساتھ 107، پاکستان 31 کے ساتھ 108 جبکہ اس کے بعد شام 29، عراق 28 اور افغانستان26 کے ساتھ 111 ویں نمبر پر ہیں۔واضح رہے کہ پاکستانیوں کو دنیا کے 31 مقامات پر ویزا فری یا ویزا آن آرائیول کی سہولت موجود ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں