دو ہفتے گزرنے کی باوجود سائنس کالج دھماکہ کی رپورٹ سامنے نہیں آسکے، مولانا عبدالقادر لونی

کوئٹہ:جمعیت علما اسلام نظریاتی بلوچستان کے امیر حضرت مولانا عبدالقادر لونی پشین میں زمہ داران سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت ہمارے صبر اور کارکنوں کو پرامن کرنے کوکمزوری سمجھتاہے دو ہفتے گزرنے کی باوجود سائنس کالج دھماکہ کی رپورٹ سامنے نہیں آرہا ہے آخر تو صبر کی پیمانے لبریز ہوجائینگی حکومت یہ نہ سمجھے کہ جمعیت علما اسلام نظریاتی اپنے کارکنوں کی شہادتوں پر خاموش بیٹھے گے ایک درجن سے زائد ادارے کے باوجود دشمن کو کھلی چھوٹ مل جانا ناکامی کے سوا کچھ نہیں اداروں کے بے حسی سے بار بار دالخراش واقعہ پیش آتی ہے اور سانحات کی تحقیقات بھی سردخانے کی شکار ہوجاتی ہے اگر ملوث ملزمان گرفتار نہ ہوئے تو آخر ہمارا راستہ سڑکوں پر نکلنا ہے چمن بم دھماکے کے بعددھرنے میں معاہدہ ہوا تھا کہ ایک ہفتہ میں جے آئی ٹی رپورٹ سامنے لائیگی لیکن رپورٹ آج تک کیوں غائب ہے اور اگر اس کی رپورٹ سامنے لاتے تو دشمن مسلسل وار نہ کرسکتے انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کو جڑ سے اکھاڑنے کے لیے آگے بڑھے قیام امن کے لیے حکومت تمام وسائل کو بروئے کارلایا جائے انہوں نے کہا کہ دشمن قوتوں کے آلہ کار نے بدامنی اور دہشت گردی کی آگ سے ہمیں ایک صدی پیچھے دھکیل دیا حکومت امن کا کریڈٹ تو لیے رہے ہیں اور صوبے میں امن و امان کی صورت حال میں بہتری کی دعوے تو کررہے ہیں لیکن دہشت گردی کے تسلسل سے اضطراب اور بے چینی کی کیفیت سے عوام دوچار ہیں انہوں نے کہا کہ وفاقی اور صوبائی حکومت شہدا اور زخمیوں کو جلد ازجلد معاوضہ دیا جائے اور زخمیوں کو بہتر علاج معالجہ دیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں