میٹرو پولیٹن کارپوریشن کوئٹہ کا مالی بحران، شہر میں جگہ جگہ گندگی کے ڈھیر، امراض پھیلنے لگے

کوئٹہ : میٹر و پولیٹن کارپوریشن کوئٹہ کا مالی بحران حل نہ ہوسکا شہر میں صفائی کا عمل رکنے سے جگہ جگہ گندگی کے ڈھیر لگ گئے ۔ایڈمنسٹریٹر میٹرو پولیٹن کارپوریشن کوئٹہ عبدالجبار بلوچ نے بتایا کہ میٹر و پولیٹن کارپور یشن اس وقت شدید مالی بحران کا شکار ہے۔ انہوں نے بتایاکہ 30کروڑ روپے واجبات کی ادائےگی نہ ہونے پر پیٹرول پمپ مالک نے ادارے کو مزید ایندھن دینے سے منع کردیا ہے جس کی وجہ سے گزشتہ 15 روز سے صفائی اور کچہرہ اٹھانے کا کام مکمل طور پر بند ہے۔انہوں نے بتایا کہ ڈیکی ویجز ملازمین چار ماہ سے تنخواہوں سے محروم ہیں جبکہ ادارے نے 8کروڑ روپے پنشن بھی ادا نہیں کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بحران کی وجہ صوبائی حکومت کی جانب سے فنڈز نہ ملنا ہے اگر ادارے کے پیسے جاری کردئےے جائیں تو بحران حل ہو سکتا ہے۔دوسری جانب کوئٹہ شہر میں کچرہ اٹھانے کا عمل معطل ہونے کی وجہ سے شہر بھر میں کچرہ دان بھر گئے اور جگہ جگہ کچہرے کے ڈھیر لگ گئے ہیں جن سے نہ صرف تعفن پھیل رہا ہے بلکہ بیماریوں میں بھی اضافہ ہو رہا ہے۔ سڑکوں پر کچرہ پڑا ہونے کے باعث ٹریفک کی روانی بھی متاثر ہو رہی ہے۔ عوامی حلقوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ میٹروپولیٹن کارپوریشن کا مالی بحران فوری طور پر حل کرکے صفائی کا عمل دوبارہ شروع کیا جائے

اپنا تبصرہ بھیجیں