مسلط حکومت مردانہ ہے نہ زنانہ، حافظ حمداللہ

کوئٹہ :جمعیت علمااسلام کے مرکزی رہنما ڈپٹی سیکرٹری اطلاعات پی ڈی ایم اور سینٹر حضرت مولانا حافظ حمداللہ نے کہا ہے کہ ملک پر مسلط حکومت نہ مردانہ ہے نہ زنانہ تاریخ ریاست مدینہ سے ناآشنا لوگوں سے ریاست مدینہ کا توقع نہیں ریاست مدینہ میں چرس خانے اور بنگ خانے نہیں مساجد اور مدارس آباد تھے یہاں مساجد کو تالے لگائے گئے اور انہیں گرایا گیا ان خیالات کا اظہار انہوں نے تحصیل کبل سوات میں جمعیت علمااسلام کے زیراہتمام یوتھ ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا کنونشن سے جمعیت علمااسلام سوات کے ضلعی امیر قاری فتحت اللہ جنرل سیکرٹری مولانا سید قمر جے یو آئی تحصیل کبل کے امیر مفتی عارف اللہ جنرل سیکرٹری اشفاق خان ایڈوکیٹ افتاب حیران قاری فضل سبحان قاری فداالرحمن اور دیگر نے بھی خطاب کیا انہوں نے کہا کہ احتساب کے نام پر انتقامی سیاست کو دوام دینے میں حکمران جماعت کو ایک منفرد اعزاز حاصل ہے نیاپاکستان بنانے کے دعویدار پرانے کو صفحہ ہستی سے مٹانے کے درپے ہیں نئے پاکستان میں غریب کی جھونپڑی غیرقانونی جبکہ حکمرانوں کا 300 کنال بنی گالا قانونی ہے غریب کی جھونپڑی میں ضعیف والدین عورتیں اور معصوم بچے سرچھپاتے ہیں جبکہ 300 کنال پر مشتمل بنی گالہ میں چار کتے اور دو انسان رہتے ہیں انہوں نے کہاکہ ہم احتجاجی سیاست سے نابلد نہیں سپریم کورٹ کی دیواروں پر شلواریں لٹکانے والے ہمیں احتجاج کا طور طریقہ نہ سیکھائیں کنونشن میں جمعیت علمااسلام اور جمعیت طلبااسلام کے کارکنوں نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں