خواتین اور بچو ں کو لاپتہ کرکے حالات خراب کرنیکی کوشش کی جارہی ہے، بلوچ وومن فورم

بلوچستان میں خواتین کی جبری گمشدگی کے خلاف کوئٹہ میں احتجاجی ریلی نکالنے کا اعلان۔ بلوچ وومن فورم کی جانب سے بلوچستان میں عورتوں اور بچوں کی جبری گمشدگی کیخلاف احتجاجی ریلی نکالی جائے گی۔ بلوچ وومن فورم کے ترجمان نے اپنے جاری بیان میں کہا کہ گزشتہ رات فورسز نے سیٹلائٹ ٹاﺅن سے ماحل بلوچ کو بچوں سمیت حراست میں لے کر جبری لاپتہ کردیا جبکہ صبح بچوں کو رہا کردیا گیا۔ ترجمان نے مزید کہا کہ آئے روز بلوچستان میں عورتوں اور بچوں کو جبری گمشدگی کا شکار بنایا جارہا ہے جو انتہائی تشویشناک عمل ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ریاست بلوچستان میں جان بوجھ کر حالات کو خراب کیا جارہا ہے۔ اس سے پہلے بھی خواتین کو فورسز نے ہوشاب، کوئٹہ، بولان اور ہرنائی سے جبری طور اغوا کیا، لیکن ان واقعات پر میڈیا اور حکومتی ادارے مکمل خاموش ہیں۔ اس بات کا غالب امکان ہے کہ اگر فورسز کو بلوچستان میں کارروائیوں کی مزید چھوٹ دی گئی تو اس طرح کے واقعات میں مزید تیزی سے اضافہ ہوسکتا ہے۔ ترجمان نے کہا کہ خواتین اور بچوں کی جبری گمشدگی کیخلاف بروز اتوار 19 فروری صبح 10 بجے ڈگری کالج شال سے ایک احتجاجی ریلی نکالی جائے گی، ہم کوئٹہ کے غیور عوام سے اپیل کرتے ہیں کہ بلوچ قوم پر جاری مظالم کیخلاف اپنی آواز بلند کریں اور اس سیاسی مزاحمت میں ہمارا ساتھ دیکر مظلوم اقوام کی آواز بنیں اور اپنی شرکت یقینی بنائیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں