پنجگور، خسرے کی وبا سے دو بھائیوں سمیت درجنوں افراد متاثر، صحت مراکز میں سہولیات ناپید

پنجگور : پنجگور کی تحصیل گچک میں خسرے نے تباہی مچا دی ایک ہی گھر میں دو بھائیوں سمیت علاقے میں کئی افراد ایک سال عمر سے 35 سال عمر کے درجنوں افراد شدید متاثر ہوئے ہیں تاحال محکمہ صحت کی کوئی ٹیم علاقے میں نہ پہنچ سکی تحصیل گچک میں اس وقت دو بیسک ہیلتھ یونٹ موجود ہیں لیکن سہولیات و ڈاکٹر نہ ہونے کی وجہ سے غیر فعال ہیں دن بدن وبا پھلتا جارہا ہے کوئی پرسان حال نہیں ہے بڑھتے ہوئے وبا سے لوگوں میں شدید تشویش پائی جاتی ہے ان کا کہنا ہے کہ اب تک درجن کے قریب خسرے کی وبا سے بچے و دیگر کے لوگ ہوئے ہیں ان متاثرین میں مزمل ولد عبد الحکیم عمر ایک سال کم و بیش سرفراز محمد سلیم پسران عبدالحمید لعل جان ولد مصطفیٰ ودیگر شامل ہیں جو پنجگور کے تحصیل گچک سرگوز کے رہاشی بتائے جاتے ہیں ان میں کئی متاثرین کو پنجگور ٹیچنگ ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے واضح رہے تحصیل گچک پنجگور سے دشوار راستوں سے ہوتے ہوئے چار سے پانچ گھنٹے کے مسافت پر ہے لوگوں کو اپنی مریض پنجگور لانے کیلئے شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ان کا کہنا ہے کہ تحصیل گچک میں دو بیسک ہیلتھ یونٹ ہیں جو سرگوز علاقے سے بہت دور ہیں ان میں ایک یونٹ دمگی دوسرا گچک کہن میں ہے وہ بھی ان میں کوئی ڈاکٹر سہولیات موجود نہیں ہے بند ہونے کے برابر ہیں انہوں نے کہا ہے کہ پنجگور میں وقتاً فوقتاً ویکسین مہم چلایا جاتا ہے لیکن ان دشوار علاقوں میں کوئی نہیں آتا ہے اس لئے دور دراز علاقوں میں زیادہ تر بیماریاں وبائی صورت اختیار کرتے ہیں انہوں نے محکمہ صحت کے زمہ داروں سے علاقے میں خسرے کی ویکسین مہم چلانے کا مطالبہ کیا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں