فلموں کی آڑ میں خلیجی ملکوں کی اسرائیل سے تعلقات استوار کرنے نئی چال

کویت سٹی،خلیجی عرب ممالک کی طرف سے اسرائیل کے ساتھ دوستانہ تعلقات کے قیام کے لیے آئے روز طرح طرح کے حربے اور چالیں چلائی جا رہی ہیں۔میڈیارپورٹس کے مطابق سعودی عرب کے ملکیتی چینل نے رواں سال ایک رمضان سیریز کے حوالے سے ام ھارون نامی ایک نئی فلم ریلیز کرنے کا فیصلہ کیا۔ اس فلم کی آڑ میں دراصل خلیجی ملکوں بالخصوص سعودی عرب اور اسرائیل کے درمیان تعلقات کو معمول پرلانے کی کوشش کی گئی۔ام ھارون نامی فلم کی کہانی ایک یہودی خاتون کے گرد گھومتی ہے۔ اس کے علاوہ خلیج عرب میں یہودیوں کے بارے میں بیان کیا گیا۔در پردہ اس فلم میں خلیج عرب کے یہودیوں کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے فلسطینیوں کی اسرائیل کے خلاف مزاحمت کی نفی کی گئی ہے۔ اس کے علاوہ خطے کے یہودیوں کو درپیش مسائل پر روشنی ڈالی گئی۔اس کے علاوہ فلم میں یہودیوں اور مسلمانوں کیدرمیان دوستی کے قصے بیان کئے گئے۔ اس کے علاوہ یہودی پیشواؤاں کے لباس، ان کے طریقہ عبادت، مسلمانوں اور یہودیوں کیدرمیان کشیدگی اور کشمکش پربھی بات کی گئی ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں