گوادر کے عوام کیساتھ نا انصافی اور تذلیل کا سلسلہ ختم ہونا چاہیے،لیاقت لہڑی

کوئٹہ:ممتاز سیاسی و قبائلی رہنماء میر لیاقت علی لہڑی نے اپنے جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ صوبائی حکومت عوام کے بنیادی مسائل سے غافل ہو چکی ہے صوبائی حکومت کی سرد مہری قابل افسوس ہے عوام کے حقیقی مسائل سے چشم پوشی سے روز بروز ابتر ہوتے جا رہے ہیں گوادر اور مکران کے عوام پر ظلم کی انتہا ہے حکومت کی غیر سنجیدگی کی وجہ سے عوامی غصے اور مایوسی میں بے تحاشہ اضافہ ہو رہا ہے غیر قانونی ٹرالرنگ کا خاتمہ، بارڈر تجارت کی آزادانہ اجازت اور دیگر مطالبات بنیادی حقوق کی زمرے میں آتے ہیں اختیار داروں کا ایسے مسائل پر لاتعلق ہونا شہریوں کے بنیادی حقوق سے انحراف کرنے کا آئینہ دار ہے گوادر کے عوام تعلیم روزگار پانی اور بجلی سے محروم ہیں اہل گوادر اپنے بنیادی حقوق کے حصول کیلئے میدان میں آگئے ہے گوادر کی معدنیات اور زمینوں پر مکین گوادر کا حق ہے لیکن ہم نے ایک ایسی اندھیر نگری میں پرورش پائی ہے جہاں انسانیت منہ چھپا کر پھر رہی ہے ہمیں انصاف کو سر فہرست رکھنا ہوگا اور ایک دوسرے کے جائز حقوق تسلیم کرنے ہونگے گوادر اور مکران کے عوام سے ہمیشہ ترقی کے نام پر دھوکہ کیا گیا اربوں روپے کے فنڈز جاری ہوے مگر گوادر کے لوگ آج بھی تعلیم بجلی پانی اور باعزت روزگار کیلئے احتجاجی مظاہروں اور دھرنوں پر مجبور ہے ترقی کے نام پر گوادر اور مکران کے باشندوں کو کی تذلیل اور لولی پاپ کھلانا بند کریں دھرنے میں بیٹھے لوگوں کی بددعا سے بچیں اللہ کی لاٹھی بے آواز ہے اقتدار آنے جانے والی چیز ہے حکومتی اراکین یہ مت بھولیں کہ انہوں نے پھر اپنے عوام کے درمیان آکر ووٹ لینا ہے گوادر سمیت مکران کے عوام کے ساتھ مزید کھیلنا بند کیا جائے حق دو تحریک کے تمام مطالبات فی الفور منظور کر کے ان پر عمل درآمد کی جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں