سکیورٹی پالیسی کی بنیاد پرکشمیرکے ساتھ کھیل کھیلا گیا، مولانا فضل الرحمان

جمعیت علمااسلام (جے یو آئی)کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہیکہ قومی سلامتی پالیسی بن رہی ہے اور پارلیمنٹ بے خبر ہے، ہماری قوم کا مستقبل اندھیرے میں دھکیلا جا رہا ہے۔؎
مانسہرہ میں پیغام اسلام کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ سکیورٹی پالیسی کی بنیاد پرکشمیرکے ساتھ کھیل کھیلا گیا، عام آدمی کی قوت خرید ختم ہوگئی ہے، عمران پہلے ناجائز حکمران تھے اب نالائق حکمران بھی ہیں۔
مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ بلدیاتی انتخابات کیاگلیمرحلے میں بھی گو نیازی ثابت کرکے دکھاناہے، 5 وزیر خزانہ تبدیل ہوئے مگر اسٹیٹ بینک کے گورنرکو نہیں ہٹا رہے،کیونکہ اسٹیٹ بینک کا گورنر آئی ایم ایف کا ایجنٹ ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اسلام میں بُرائی روکنے کا ذمہ دار حکمران ہوتا ہے، ہمارے ہاں برائی کی جڑ ہی حکمران ہیں، برائیوں کی جڑوں کو اکھاڑ پھینکنا پڑتا ہے۔
انہوں نیکہا کہ قوم کے اجتماعی مفادکے لیے علما کو متحد ہوکرکام کرنا ہوتا ہے، قومی معاملات میں ایک فرد کی رائے کافی نہیں، پاکستان میں جے یوآئی کو عوام کی بھرپور حمایت اور اعتماد حاصل ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں