سوراب، بورنگ میں گرنے والی 14 سالہ بچی کی لاش 4 گھنٹوں بعد نکال لی گئی

سوراب (انتخاب نیوز) زہری رودینی گدر میں بورنگ میں 14 سالہ بچی گرنے سے جاں بحق،نعش کو نکالنے کے لیے علاقائی،لیویز فورس،1122 کا مسلسل 4 گھنٹے بعد آپریشن مکمل،نعش ورثاءکے حوالے تفصیلات کے مطابق گدر زہری رودینی میں بروز ہفتہ صبح 10 کے قریب مشین کے کنویں (بورنگ) میں عبدالستار زہری نامی شخص کی 14 سالہ صاحبزادی گر گئی جبکہ عین اسی وقت بچی کے ورثا و کلی کے لوگ ضلعی انتظامیہ کو اطلاع دے دی گئی اور ڈپٹی کمشنر سوراب جلال الدین خان کاکڑ فوری طور پر ڈی جی و پی ڈی ایم اے،گھڈکوچہ ریسکیو سے رابطہ کرکے ان کے ٹیم طلب کر لی اور دوسری جانب اسسٹنٹ کمشنر سوراب محمد اسماعیل مینگل لیویز فورس کے ہمراءموقع پر پہنچ گئے اور بورنگ کے کام میں ماہر استاد شکیل احمد ریکی کو بلایا گیا جوکہ شکیل احمد اپنے ٹیم (استاد امان اللہ و وڈیرہ)،ضلعی انتظامیہ،1122 ریسکیو ٹیم گدر اور علاقائی لوگوں کی تعاون سے امدادی آپریشن شروع کردی گئی اور کیمرہ کی مدد سے بورنگ کے پوزیشن واضح ہوتے ہی گدر کے باہمت نوجوان برکت دیوار کو رسی کی مدد سے بورنگ میں بھیج دی گئی اور باہمت نوجوان 10 منٹ میں بورنگ کے اندر زندہ سانپ کو مار بچی کو رسی کی مدد سے برابر کرکے واپس اوپر آ گئے اور یوں ہی بچی کو بورنگ سے مردہ حالت میں باہر نکالنے میں کامیاب ہوگئے اور اسی طرح مسلسل 4 گھنٹوں کے بعد امدادی آپریشن مکمل کر کے نعش ورثاءکے حوالے کر دیا گیا جبکہ دوسری جانب ضلعی انتظامیہ کے اطلاع پر پی ڈی ایم اے کے ٹیم کوئٹہ سے سوراب کے نکلے تھے لیکن ان کے آنے سے پہلے،ضلعی انتظامیہ،علاقائی،1122 ریسکیو کا ریسکیو آپریشن مکمل ہوگیا، استاد شکیل احمد ریکی اور برکت دیوار کو اس طرح کے مشکل و سخت حالات میں امدادی آپریشن میں بچی کو بورنگ سے نکالنے پر ضلعی انتظامیہ کے ہیڈ ڈپٹی کمشنر سوراب جلال الدین خان کاکڑ نے ان دونوں کے لیے دس،دس ہزار روپیہ کا اعلان کر دیا ہے جبکہ پیر کے دن ان کے اعزازات سے نوازنے کے لئے ڈی سی کمپلیکس بلایا گیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں