کروڈوں روپے زر مبادلہ دینے والا ساحلی عالاقہ چربندن بنیادی سہولیات سے محروم

گوادر(مانیٹرنگ ڈیسک) قومی خزانے کو سالانہ مچھلی اور جھینگوں کی مد میں کروڈوں روپے زر مبادلہ دینے والا ساحلی عالاقہ چر بندن زندگی کے تمام تر بنیادی سہولیات سے محروم، مکین کسمپرسی کا شکار، روڈ کی خستہ حالی سے مکین منٹوں کا سفر کھنٹوں میں طے کرتے ہیں ، شہر کے قریب واقع ہونے کے باوجود اکثر ایمرجنسی میں مریضوں کو مشکلات کا سامنا۔تفصیلات کے مطابق سی پیک شہر ضلع گوادر کے تحصیل پسنی کا ساحلی علاقہ چْر بندن زندگی کی تمام تر سہولیات سے محروم ہے، چْر بندن میں بجلی و پانی اور طبعی سہولیات سرے سے ناپید ہیں ، چر بندر کے 6 ہزار سے زاہد آبادی کے لئے صحت کی سہولیا ت میسر نہیں۔ سڑکیں نہ ھونے کی وجہ سے اکثر مریض راستے ہی میں دم توڈ دیتے ہیں۔علاقہ مکینوں کے مطابق چْر بندن کے اکثر ترقیاتی کام کاغزی کاروائی تک محدود ہوکر کرپشن کے نزر ھوچکے ہیں جن میں کروڈوں روپے کے اٹالین گرانٹ کے پائپ لائن اور بلوچستان حکومت کے فنڈ سے سڑک شامل ہے،سڑکوں سے لیکر پانی پائپ لائن کی بچھائی تک اب تک کوئی پرجیکٹ پایہ تکمیل تک نہیں پہنچا۔ علاقہ مکینوں کے مطابق چر بندن جو اتنی بڑ ی آبادی پر مشتمل ہے یہاں ہم اس دور جدید میں بھی کمسپرسی کی زندگی گزار رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہیکہ چربندن منتخب نمائندوں کی عدم توجہی کا شکار ہے کہ ھم نمائندوں کو بس ہر پانچ سال بعد ووٹ کے لیئے یاد آتے ہیں جس کے بعد کوئی بھی نمائندہ ہماری طرف مْڑ کر نہیں دیکھتا۔ ان کا کہنا ہیکہ چْر بندر پچھلے کہیں سالوں سے بجلی کی سہولیات سے بھی محروم ہے۔ مقامی لوگوں نے کہا ہے کہ اتنی بڑی آبادی میں ایک بی ایچ یو تک کی سہولت میسر نہیں ۔ پسنی شہر 27 کلو میٹر کے فاصلے پر ہونے کی وجہ سے ایمر جنسی میں ہمیں ٹرانسپورٹ کے لیئے بھاری رقم کی ادائیگی کرنی پڑتی ہے۔ کچھی اور بے ہنگم سڑکوں کی وجہ سے اکثر ہمیں 27 کلو میٹر کا سفر گھنٹوں میں طے کرنا پڑتا ھے جسکی وجہ سے اکثر مریض رستے ہی میں دم توڈ دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا ہے کہ چْر بندر میں پبلک ہیلتھ کی طرف سے لاکھوں روپوں کی اٹالین گرانٹ سے بچھائے گئے پائپ لائن انتہائی ناقص ہیں۔ انہوں کہا ہیکہ چْر بندر کو پانی فراہم کرنے والے پائپ لائن انتہائی غیر معیاری ہیں جنہیں بچھائے عرصہ ہوا مگر ابتک علاقے میں ایک بوند پانی میسر نہیں۔انہوں نے کہا ہے کہ چربندر کے سرکاری سکولوں میں تعلیمی سہولیات کا فقدان ہے۔چربندر کا واحد ہائی اسکول میں کمروں کی کمی کی ساتھ امتحان حال و سائنس لیبارٹری و سائنسی آلات کا فقدان ہے اور اسکول کی عمارت انتہائی مخدوش و خستہ حالی کا شکار ہے۔ اسکول میں اساتزہ کی کمی و دیگر بجلی پانی کیساتھ کسی قسم کی سہولیات موجود نہیں۔ اس دور جدید میں ایک سازش کے طور پر چر بندر کو جان بوجھ کر پتھر کے زمانے میں دھکیلا جارہا ہے جو ہمارے بچوں کی مستقبل کے ساتھ سراسر نا انصافی ہے۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ ہم نے متعدد بار حکام بالا تک اپنے مسائل کا رونا رویا ہے باوجود کہ کوئی بھی نمائندہ علاقائی مسائل کو حل کرنے میں سنجیدہ نہیں۔ اور انہوں نے بالا حکام سے مطالبہ کیا ہیکہ علاقے کے مسائل فی الفور حل کئے جائیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں