نام نہاد پی ڈی ایم حکومت نے سودی نظام کے فیصلے کو بھی چیلنج کردیا، حافظ حسین احمد

کوئٹہ (انتخاب نیوز) جمعیت علماء اسلام پاکستان کے سینئر رہنما اور ممتاز پارلیمنٹرین حافظ حسین احمد نے کہا کہ اب پی ڈی ایم کی مخلوط حکومت نے وفاقی شر عی عدالت کے سودی نظام کیخلاف فیصلے کو بھی سپریم کورٹ میں چیلنج کر دیا ہے جبکہ اس سے پہلے 1992ء میں میاں نواز شریف بھی اپنے دور حکومت میں سود کیخلاف وفاقی شرعی عدالت کے فیصلے پر سپریم کورٹ سے ”اسٹے آرڈر“ لے چکے ہیں۔وہ ہفتہ کو اپنی رہائشگاہ جامعہ مطلع العلوم میں مختلف وفود اور میڈیا سے گفتگو کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی موجودہ معاشی بدحالی کی بنیادی وجہ ہی صرف سودی نظام ہے اب ہم اس بدتر مقام پر پہنچ چکے ہیں جہاں قرضوں کے سود در سود ادائیگی کے لئے مزید قرضہ لینے پڑ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم کی مخلوط حکومت میں شامل وہ جماعتیں جو ”خدا کی زمین پر خدا کا نظام“ لانے کے دعویدار ہیں ان کے لیے یہ اقدام ندامت ہے جبکہ اس سے قبل ”ریاست مدینہ منورہ“ کے نام نہاد دعویدار بھی سودی نظام کو جاری رکھنے کے جرم کے مرتکب ہوئے۔ انہوں نے کہا ملک کی معاشی تباہی اور بربادی کی ذمہ دار ہر آنے والی حکومت، جانیوالی حکومت کو قرار دیتی ہے۔ حالانکہ اصل وجہ اللہ تعالی اور اس کے پیارے حبیب حضرت محمد ؐ سے ”جنگ“ یعنی سودی نظام ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں