چھوٹے میاں صاحب! ادھر ادھر کی چھوڑئیے یہ بتائے واپس کب آرہے ہیں، مراد سعید

اسلام آباد:وفاقی وزیر مواصلات مراد سعید نے کہا ہے کہ چھوٹے میاں صاحب! ادھر ادھر کی چھوڑئیے یہ بتائے واپس کب آرہے ہیں، بھاشن فرمانے کا شوق دل میں انگڑائیاں لے رہا ہے تو قومی اسمبلی میں تشریف لائیے، آپ کے منتظر ہیں،میاں صاحب! مولانا کو آپ کی یاد شدت سے ستا رہی ہے اور تمام اپوزیشن ایڑھیاں اٹھائے آپ کی راہ تک رہی ہے۔شہباز شریف کے بیان پر پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے جواب میں وفاقی وزیر مواصلات مراد سعید نے کہا کہ چھوٹے میاں صاحب! ادھر ادھر کی چھوڑئیے یہ بتائے واپس کب آرہے ہیں، درازوں میں بند رپوٹوں کی فکر بعد میں کیجئے پہلے زبان زد عام کہانیوں کا جواب تو دیجئے۔انہوں نے کہا کہ چھوٹے میاں صاحب! ہم نے جیسے آپ کے دفتر سے چوری میں ملوث کارندے ڈھونڈ نکالے ایسے آٹا چینی کی قلت پیدا کرنے والوں تک بھی پہنچ جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ قوم کو اچھے سے یاد ہے کہ کیسے آپ نے کمیشن ٹھکانے لگانے کیلئے نثار احمد گل کو اپنے دفتر میں ڈائریکٹر پولیٹیکل افیئرز لگایا۔انہوں نے کہا کہ چھوٹے میاں صاحب! آپ کے دفتر میں پالیسی والے ڈائریکٹر صاحب علی احمد صاحب کا نام بھی عوام کہاں بھولے ہیں۔مراد سعیدنے کہ کہ میاں صاحب! گڈ نیچر ٹریڈنگ کمپنی، یونی ٹاس لمیٹڈ، نثار ٹریڈنگ کمپنی کے ذریعے آپ نے جمہوریت کو جو چار چاند لگائے پلیز واپس آکر قوم کو اسکے بارے میں بتائیں۔انہوں نے کہا کہ میاں صاحب قوم آپ نے وقار ٹریڈنگ کمپنی، مقصود اینڈ کمپنی اور مشتاق اینڈ کمپنی کے ذریعے جو عوام میں مفت چینی، آٹا، دالیں اور گھی وغیرہ مفت تقسیم کئے قوم کو اسکا بھی بتائیں۔انہوں نے کہا کہ چھوٹے میاں صاحب! فرزند زرداری بھی آپ کی اور بڑے میاں کی یاد میں اداس اور دلگرفتہ ہیں۔انہوں نے کہ کہ میاں صاحب! مولانا کو آپ کی یاد شدت سے ستا رہی ہے اور تمام اپوزیشن ایڑھیاں اٹھائے آپ کی راہ تک رہی ہے۔انہوں نے کہ کہ بھاشن فرمانے کا شوق دل میں انگڑائیاں لے رہا ہے تو قومی اسمبلی میں تشریف لائیے، آپ کے منتظر ہیں۔انہوں نے کہا کہ میاں صاحب! چھپنے کیلئے لندن کی گلیاں بھی آج اتنی ہی غیر محفوظ ہوچکی ہیں جتنی لاہور کی، خود تشریف لائیے وگرنہ “شاہی سواری” کے ذریعے واپسی کا آپشن بھی دستیاب ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں