ہائیکورٹ کے 6 ججز کے بعد اے ٹی سی جج کا خط تشویشناک ہے، پی ٹی آئی

لاہور( این این آئی)پاکستان تحریک انصاف نے کہا ہے کہ اسلام آباد ہائیکورٹ کے 6 ججز کے بعد انسدادِ دہشتگردی عدالت کے جج کا خط ہرپہلو سے تشویشناک اور عدلیہ پر چھائے جبر و مداخلت کے منحوس سایوں کی نشاندہی کرتے ہیں۔ ترجمان پی ٹی آئی نے کہا کہ اسلام آباد ہائیکورٹ کے 6 ججز کی جانب سے جوڈیشنل کنونشن کے انعقاد کا مطالبہ نہایت معقول اور سنگین ترین صورتحال میں عدلیہ کی آزادی اور مستقبل کیلئے اہم تھا، چیف جسٹس آف پاکستان بدقسمتی سے حالت انکارمیں ہیں جبکہ ان کی دہلیز سے لے کر نیچے تک پوری عدلیہ ملک میں لاقانونیت کا دھندہ چلانے والے ریاستی ہرکاروں کے شکنجے میں قید ہے۔انہوںنے کہا کہ ملک کو دستور، قانون، جمہوریت اور بنیادی حقوق کا مقتل بنانے والوں نے عدلیہ کو ترجیحی بنیادوں پر جکڑا اور ڈر، خوف اور لالچ کے ذریعے ججز کو قانون کی حکمرانی سے باز رکھنے کی کوشش کی، یہ ایک مسلمہ حقیقت ہے کہ ہماری عدلیہ اپنے قدموں پر کھڑی ہوتی تو کسی ظالم، جابر اور فسطائی کو ملک میں لاقانونیت کا دھندہ چلانے کی ہمت نہ ہوتی۔انسدادِ دہشتگردی عدالت کے خط پر چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ کی جانب سے نوٹس اور کارروائی خوش آئند اور نہایت قابلِ تحسین ہے۔چیف جسٹس آف پاکستان اپنے منصب اور حلف سے وفا کریں اور عدلیہ سے وفاداری نبھاتے ہوئے فوری ملک گیر جوڈیشل کنونشن طلب کریں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں