جعفرآباد میں کھاد کی بلیک مارکیٹنگ کرنے کی کسی کو اجازت نہیں دینگے،ڈپٹی کمشنر

ڈیرہ اللہ یار: ڈپٹی کمشنر جعفرآباد رزاق خان خجک نے کہا ہے کہ جعفرآباد میں کھاد کی بلیک مارکیٹنگ کرنے کی کسی کو اجازت نہیں دینگے ڈیلر مقررہ قیمت پر کھاد کی فروخت کو یقینی بنائیں کھاد کے بحران اور بلیک مارکیٹنگ سے کاشتکار اور زمینداروں کا مالی نقصان ہو رہا ہے بلیک مارکیٹنگ کرنے والوں کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی ان خیالات کا اظہار انہوں نے کھاد بحران اور بلیک مارکیٹنگ سے متعلق منعقدہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے شرکاء سے خطاب میں کیا اجلاس میں تحصیلدار امداد حسین مری نائب تحصیلدار محمد ظریف گولہ کھاد کے ڈیلرز کاشتکار زمیندار اور انجمن تاجران کے نمائندے شریک تھے اجلاس میں کاشتکاروں نے شکایت لگائی کہ ڈیلرز نے منافع خوری کے لیے کھاد کا مصنوعی بحران پیدا کیا ہے اوپن مارکیٹ سے کھاد ناپید کرکے قیمتوں میں ایک ہزار گنا اضافہ کر دیا گیا یوریا کھاد کی فی بوری 1750 میں فروخت ہوتی تھی وہی بوری تین ہزار روپے میں من پسند زمینداروں کو فروخت کی جا رہی ہے چھوٹے زمینداروں اور کاشتکاروں کو کھاد نہیں دیا جا رہا گندم کی فصل کو پکنے سے پہلے کھاد دیا جاتا ہے تاہم کھاد نہ ملنے کے باعث شدید پریشانی سے دوچار ہیں گندم کی فصل کو نقصان کا اندیشہ ہے اجلاس میں کھاد کے ڈیلرز کا کہنا تھا کہ کمپنیوں سے کھاد کی رسد مطلوبہ ہدف سے کم ہے جبکہ یہاں طلب زیادہ ہے ڈپٹی کمشنر رزاق خان خجک نے کہا کہ ڈیلرز کمپنیوں کو مطلوبہ ضرورت سے آگاہ کریں اور رسد بڑھائیں تاکہ بحران پر قابو پایا جاسکے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں