ریاست اور اس کے اختیارات و پالیسیوں پر قابض قوتوں و اداروں کی پالیسیاں پشتون دشمنی پر مبنی ہے،این ڈی ایم

کوئٹہ :نیشنل ڈیموکریٹک موومنٹ کے صوبائی صدر احمد جان خان نے کہا ھے کہ پارٹی کے تنظیمی اداروں کی کنونشن و کانفرنسوں کی انعقاد سے پارٹی کارکنوں و نوجوانوں کو فیصلہ سازی اور قیادت کے مواقع حاصل ھونگے اور این ڈی ایم اپنی جمہوری، ترقی پسند اور وطن پال سیاسی نظریات وعمل اور واضح سیاسی موقف کی بدولت مختصر وقت میں تنظیمی اداروں کی تشکیل کے مرحلے میں داخل ھوئی ھے اور مرکزی کنونشن،خیبر پشتونخوا، جنوبی پشتونخوا و بلوچستان، سندھ کے کامیاب صوبائی کنونشنوں و کانفرنسوں کے بعد اب ضلعی سطح پر اس کا انعقاد کیا جارھا ھے ان خیالات کا اظہار انہوں نے ھرنائی میں پارٹی کے ضلعی کانفرنس کی انعقاد کیلئے منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میں ضلع ھرنائی کے ضلعی کانفرنس 18 دسمبر کو منعقد کرنے کا فیصلہ کیاگیا اور اس کی تیاری کیلئے مختلف کمیٹیاں تشکیل دی گئی۔انہوں نے کہا کہ ملک میں استعماری و استحصالی نظام سے نجات اور حقیقی جمہوریت و قوموں و عوام کی حق حاکمیت و حق ملکیت کی حصول کیلئے حقیقی معنوں میں جمہوری و ترقی پسند سیاست اور جدوجہد کی اولین ضرورت ھے کیونکہ سیاست اور سیاسی پارٹیوں کی کمزوری و تنزلی کی وجہ سے ملک کی استعماری و آمرانہ قوتیں اور استحصالی طبقات مضبوط ھوئی ھے جس سے پشتون ودیگر محکوم اقوام و عوام کی محرومیوں میں اضافہ ھوا ھے۔انہوں نے کہا کہ ریاست اور اس کے اختیارات و پالیسیوں پر قابض قوتوں و اداروں کی پالیسیاں پشتون دشمنی پر مبنی ھے۔پشتونخوا وطن پر سوات سے لیکر ھرنائی تک دھشت گردی، بدامنی، خوف و دہشت ریاستی اداروں نے مسلط کی ھے۔ضلع ھرنائی میں سیکورٹی فورسز نے عوام کی زندگی اجیرن بنا دی ھے۔شہید خالقداد بابر کی شہادت و دیگر نوجوانوں کو زخمی کرنے اور عوام پر مسلط اذیت ناک صورتحال کیخلاف سیاسی پارٹیوں اور خوست دھرنا کمیٹی کے طویل جمہوری تحریک اور صوبائی حکومت و سول انتظامیہ کا اس سلسلے میں اعلانات پر عمل درآمد کرنے کے بجائے فورسز نے انتقامی کاروائیاں شروع کی ھے۔ھرنائی، خوست میں عوام کی زمینوں پر قبضہ اور تمام تجارتی و کاروباری معاملات کو غیر آئینی و غیر قانونی طور پر اپنے کنٹرول میں لیکر عوام، تاجروں، کول مائینز اونرز، مزدوروں کو یرغمال بناکر سول انتظامیہ کو مکمل مفلوج بنایا ھے۔اور ائے روز غیر قانونی احکامات جاری کرکے عوام کی عزت نفس اور انسانی و شہری حقوق پائمال کیے جارھے ہیں اور اگر یہی اذیت ناک صورتحال اور عوام دشمنی کا سلسلہ مزید جاری رھا تو عوام اور سیاسی پارٹیاں دوبارہ جمہوری احتجاجی تحریک شروع کرنے پر مجبور ھونگے۔انہوں نے پارٹی کارکنوں کو تاکید کی کہ ضلعی کانفرنس کی کامیابی کیلئے تمام فیصلوں کو بروقت عملی بنائیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں