ضلع کچھی بولان میں بلدیاتی انتخابات مکمل، دو یونین کونسل میں انتخاب نہ ہوسکا

مچھ : ضلع کچھی بولان میں بلدیاتی انتخابات کے تیسرے مرحلے اور تمام مراحل پرامن طریقے سے پایہ تکمیل کو پہنچ گئے ہیں تاہم ضلع کچھی کے دو یونین کونسلز میں انتخابات ہونا باقی ہے مذکورہ یونین کونسلوں پرچند ناگزیر وجوہات کی بنا پرانتخابات نہ ہوسکی یہ ضلع صوبہ بلوچستان کا ایک بہت بڑا وسیع رقبے پر مشتمل ہیں ضلع کچھی کولپور سے لے کر شہداد کوٹ تک پھیلا ہوا ہے اس ضلع کا آبادی تقریبا پانچ لاکھ سے زائد نفوس پر مشتمل ہے اس میں کل پانچ تحصیل ہے جن میں تحصیل مچھ تحصیل بھاگ تحصیل ڈھاڈرتحصیل سنی تحصیل کھٹن تحصیل بالاناڑی شامل ہیں ضلع کچھی میں 30 یونین کونسلز تین میونسپل کمیٹیز ہیں ضلع کچھی میں بنیادی سہولیات ناپید ہیں پینے کا صاف پانی ہے نہ معیاری سکول صحت کی سہولیات نہ ہونے کے باعث لوگ ایڑیاں رگڑ رگڑ کر مرتے ہیں ضلع کچھی کے تحصیل بھاگ میں پینے کے صاف پانی دستیاب نہیں لوگ سیلابی پانی کو جوہڑوں میں محفوظ کرکے سالوں بھر اسی کو ہی پینے کیلئے استعمال کرتے ہیں جس کیوجہ سے بھاگ و گردنواح میں یرقان پیٹ کے امراض سمیت ہر دوسرا شخص کسی نہ کسی امراض میں مبتلا نظر آئے گا بھاگ کے عوام اور سیاسی جماعتوں نیشنل پارٹی نے صاف پینے کے پانی کیلئے مسلسل تحریکیں چلائی اوران تحریکوں اور احتجاجوں کے نتیجے میں وقتی طور پر حکومت بلوچستان اورمختلف ادارے نوٹس بھی لیتے رہے مگر بھاگ کے عوام آج بھی صاف پینے کے پانی کیلئے ترس رہے ہیں مارچ 2019 کی ابتدائی دنوں میں تحصیل بھاگ سے تعلق رکھنے والے نوجوان وفامراد سومرو نے باقاعدہ بھاگ ناڑی کو پانی دو تحریک کا آغازکیا اور اسی تحریک نے بھاگ ناڑی سے کوئٹہ تک لانگ مارچ کی اور پریس کلب کوئٹہ کے سامنے پہنچ کر تادم مرگ بھوک ہڑتالی کیمپ کا آغاز کرکے بلوچستان کی تاریخ میں ایک باب کا اضافہ کردیا حکومت بلوچستان نے مسلسل مذاکرات کے بعد وفا مراد سومرو و ان کے ساتھیوں نے تو احتجاج ختم کردیا لیکن بلوچستان حکومت نے حسب روایت معاملہ کو سستی اور غفلت کا مظاہرہ کرکے دبادیا بھاگ کے عوام کا صاف پانی کا خواب صرف خواب ہی رہ گیا تحصیل ڈھاڈر بھی زندگی کی تمام تر سہولتوں سے محروم ہے نیشنل پارٹی جمعیت علما اسلام جوانان تحرک ودیگر سیاسی جماعتیں مسلسل علاقے کی اجتماعی ایشوز پر احتجاج کرتے رہے ہیں تحریک جوانان کے رہنما بابر خان خجک نے ڈھاڈر اور ضلع کچھی میں سوئی گیس کی فراہمی صحت و تعلیمی نظام کے زبوں حالی کیخلاف ڈھاڈر پریس کلب کے سامنے علامتی بھوک ہڑتالی کیمپ لگاکر بیٹھ گئے مقامی انتظامیہ نے مذکرات کے بعد یہ احتجاج ختم کردیا گیا اور اس کافائدہ کم از کم یہ ہواضلع کچھی میں لوکل ۔ڈومیسائل سرٹیفکیٹ کمپیوٹر سسٹم پر منتقل کردیا گیا بابر خان خجک اور ان کے ساتھیوں کو یہ بھی اعزاز حاصل ہے کہ انھوں نے تحفظ ناموس رسالت کیلئے ڈھاڈر سے اسلام آباد تک ہزاروں کلو میٹر پیدل لانگ مارچ کرکے دنیا میں ایک تاریخ رقم کردی ڈھاڈر اس کے گردنواح میں بنیادی سہولیات کا نام و نشان نہیں ضلع کچھی میں سیکڑوں کی تعداد میں نان لوکل افراد کو ڈومیسائل کی اجرا سمیت محکمہ تعلیم و دیگر محکموں میں بوگس بھرتیوں کے بھرمار ہیں جن کیخلاف نیشنل پارٹی جمعیت علما اسلام پیپلز پارٹی جماعت اسلامی۔ تحریک جوانان بلوچستان بھاگ ناڑی کو پانی دو تحریک نے مل کر ضلعی سطح پر احتجاجی تحریک چلائی لیکن کوئی شنوائی نہیں ہوئی ضلعی انتظامیہ نے وقتی طور پر نان لوکل افراد ڈومیسائل کیخلاف یقین دہانیاں کی لیکن عملی طور پر کچھ نہیں ہوا بالاناڑی تحصیل سنی اور کھٹن میں صاف پینے کے پانی طبی سہولیات سمیت سیکڑوں ایسے مسائل ہیں جہنیں حال کرنے کیلئے کسی نے زرابرابر بھی کوشش نہیں کی ضلع کچھی کا تحصیل مچھ کا اگر زکر کیا جائے تو اس تحصیل کوکاروباری لحاظ سے دوبئی کہا جاتا تھا مچھ میں کاروبار کا دارو مدار کانکنی پر ہے بدقسمتی سے حالات کی ابتر صورتحال سے کانکنی ایک حد تک محدود ہوکر رہ گیا ہے تحصیل مچھ میں مالکانہ حقوق طبی سہولیات گیس پریشر سمیت بنیادی حقوق سے لوگ محروم ہیں نیشنل پارٹی نے مسلسل ان مسائل کیخلاف تحریکیں چلائی لیکن مسائل جوں کے توں ہے اگر مجموعی طور پر دیکھا جائے تو ضلع کچھی میں غربت کا شرح سب سے زیادہ ہے بنیادی سہولتوں سے لوگ محروم ہیں پسماندگی محرومی غربت کاراج ہے ضلع کچھی میں امن وامان کی صورتحال ابتر ہے بدامنی سے انتظامیہ کے اپنے ہی جوان شہید ہوگئے ہیں ضلع کچھی سے منتخب نمائندوں کی کارکردگی ضلع کچھی کی حالت زار دیکھ کر لگایا جاسکتا ہے ضلع کچھی کی سیاسی صورتحال کو نظر دوڑائے جائے تو یہاں ہمیشہ سیاسی جماعتیں عوام میں پذیرائی حاصل کرنے میں ناکام رہے حالیہ بلدیاتی الیکشن میں نیشنل نے بھاگ کے یونین کونسلوں میں کامیابی حاصل کرکے اپنے وجودیت کو بچالیا بھاگ تحصیل میں مفتی پینل کی کامیابی سیاسی جماعتوں کی کامیابی تصور کیا جارہا ہے سیاست پر نظر رکھنے والے مقامی دانشوروں کیمطابق ضلع کچھی میں نیشنل پارٹی کے بھاگ ناڑی کے یونین کونسلوں مچھ ڈھاڈر اور سنی کے یونین کونسلوں کو ملا کر 16 یونین کونسلوں پر گیلو پینل کو واضح برتری حاصل ہے رند پینل بظاہر 13 یونین کونسلوں پر برتری حاصل ہے بازی کسی بھی وقت پلٹ سکتا ہے کیونکہ ڈسٹرکٹ رند پینل کیساتھ ہی ہمیشہ سے رہا ہے اب وقت ہی بتائے کہ ضلع کچھی بلدیاتی الیکشن کی ضلعی چیئرمین کیلئے بازی کون لے جائیگا اور ڈسٹرکٹ چیئرمین کا تاج کس کے سرپر سجے گا کامیاب کوئی بھی ہو بس ان سے دست بدستہ درخواست ہے کہ وہ ضلع کچھی کی بنیادی مسائل کے حل کیلئے اپنے صلاحیتوں کو بروئے کار لائے اور پینل پینل کھیلنے کے بجائے غیر جانبدارانہ کردار ادا کرکے غریب مفلوک الحال عوام پر رحم کرے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں