خواجہ آصف کی گرفتاری انتقامی کارروائی ہے، پشتونخوامیپ

کوئٹہ:پشتونخواملی عوامی پارٹی کے مرکزی پریس ریلیز میں مسلم لیگ (ن) کے رہنماء خواجہ محمد آصف کی گرفتاری کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے سلیکٹڈ حکومت اور نیب کی انتقامی کارروائی قرار دیا گیا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ سلیکٹڈ حکومت کی جانب سے پہلے روز سے ہی اپوزیشن جماعتوں کے رہنماؤں کے خلاف انتقامی کارروائیاں جاری ہے اور نیب کے ذریعے ان پر ناروامقدمات قائم کرکے ان کی گرفتاریاں شروع کی گئی ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کی تحریک سے سلیکٹڈ حکومت مکمل طور پر بوکھلاہٹ کا شکار ہوچکی ہے اور اس طرح کے انتقامی کارروائیاں پی ڈی ایم کو اپنی جاری تحریک سے دستبردار نہیں کرسکتی کیونکہ پی ڈی ایم اس وقت ملک کے 22کروڑ عوام کی ترجمانی کررہی ہیں اور ملک کے تمام سیاسی جمہوری جماعتیں اس تحریک میں شامل ہیں۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ ملک میں آئین کی بالادستی، پارلیمنٹ کی سپرمیسی،قانون کی حکمرانی، عوام کے ووٹ کی تقدس کی بحالی، جمہوریت اور اس کے استحکام کیلئے جدوجہد کررہی ہیں اور اس ملک کی بقاء ترقی وخوشحالی بھی پی ڈی ایم کی بیانیہ میں پوشیدہ ہے۔ گوجرانوالہ، کراچی، کوئٹہ، پشاور، لاہور کے کامیاب اور عظیم الشان جلسوں میں عوام کی بھرپور شرکت سلیکٹڈ حکومت سے نجات پر ریفرنڈم ہے اور ایسے میں پی ڈی ایم کے رہنماؤں پر مقدمات قائم کرنے اور ان کی گرفتاریاں قابل مذمت اور قابل افسوس ہے۔ پشتونخوامیپ یہ واضح کرتی ہے کہ ایسے ناروا مقدمات و گرفتاریاں پی ڈی ایم میں شامل جماعتوں کو اپنی تحریک سے دستبردار نہیں کرسکتی۔ پارٹی مطالبہ کرتی ہے کہ فی الفور مسلم لیگ ن کے رہنماء خواجہ محمد آصف کو رہا کیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں