نسلہ ٹاورکیس،ایس بی سی اےکےدفترپر پولیس کاچھاپہ

کراچی:سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی (ایس بی سی اے) کے دفتر میں پولیس نے چھاپہ مارا اور نسلہ ٹاور سے متعلق درج مقدمے کے حوالے سے متعلقہ افسران سے پوچھ گچھ کی۔بدھ 28 دسمبر کی صبح پولیس کی بھاری نفری نے سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے دفتر پر چھاپہ مارا۔ نسلہ ٹاور کیس میں عدالتی احکامات کے بعد مقدمہ درج ہوا تھا۔

ایس ایس پی انویسٹی گیشن ایسٹ الطاف حسین کی سربراہی میں یہ چھاپہ مارا گیا۔ تفتیشی حکام فیروزآباد تھانے میں درج نسلہ ٹاور سے متعلق مقدمے میں اصل ذمہ داران کا تعین کریں گے۔عدالتی احکامات پر کٹنے والی ایف آئی آر میں ذمہ داران کو گرفتار کیا جائیگا۔بدھ کو تفتیشی حکام نے ماسٹر پلان سمیت دیگر شعبہ جات کے افسران سے بھی پوچھ گچھ کی۔ ڈائریکٹر ڈیزائن ایس بی سی اے فرحان قیصر سے ڈی ایس پی نے ان کے دفترمیں آ کر پوچھ گچھ کی۔

واضح رہے کہ سرکارکی مدعیت میں تھانہ فیروزآباد میں نسلہ ٹاور کے بلڈرعبدالقادرکاٹيلا،ایس بی سی اے، سندھی مسلم سوسائٹی،محکمہ ریوینیو کے افسران کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے۔مقدمے میں جعلسازی،دھوکہ دہی،اختیارات کے ناجائز استعمال سمیت 8 دفعات کیتحت درج مقدمے میں کسی افسر کا نام شامل نہیں ہے۔

گذشتہ روز مقدمہ درج ہونیکے بعد تفتیشی ٹیم نے ایس بی سی اے،سندھی مسلم کوآپریٹیوسوسائٹی کے دفاتر پہنچ کر تفصیلات جمع کیں۔تفتیشی ٹیم کی جانب سے ڈائریکٹر،ڈپٹی ڈائریکٹراسسٹنٹ ڈائریکٹر اور بلڈنگ انسپکٹر سے مرحلہ وار تفتیش کی جائے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں