کوئٹہ، ینگ ڈاکٹرز اور پولیس کے درمیان ہاتھا پائی، 20ڈاکٹرز گرفتار، 10زخمی

کوئٹہ: صو با ئی دارالحکومت کو ئٹہ میں ینگ ڈاکٹرز اور پولیس ایک با ر پھر آ منے سامنے آ گئے،ڈاکٹر ز کی جا نب سے ریڈ زون میں داخل ہونے کی کوشش کے دوران پولیس نے نا صرف 20ڈاکٹرز کو گرفتار کر لیاہے بلکہ پو لیس اور ڈاکٹرز کے ما بین ہا تھا پا ئی اور دھکم پیل میں 6پولیس اہلکا رزخمی ہو گئے ہیں جبکہ ترجما ن ینگ ڈاکٹرز ایسوی سی ایشن بلو چستان کے سوشل میڈیا پر دئیے گئے بیان میں کہا گیا ہے کہ پو لیس کی مبینہ تشدد سے ان کے 10ساتھی بھی زخمی ہو گئے ہیں۔تفصیلات کے مطابق بدھ کے روز ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن بلو چستان کی جا نب سے اپنے مطالبا ت کے حق میں احتجاجی ریلی نکا لی گئی تو پولیس نے ریڈ زون کو انسکمب روڈ پر مختلف مقامات پر خاردار تاریں لگا کر بند کر دیا اور جب ینگ ڈاکٹرز نے ریڈ زون جانے کی کوشش کی تو پولیس کی جانب سے لاٹھی چارج کیا گیا۔ینگ ڈاکٹرز کی جانب سے بھی پولیس اہلکاروں کے خلاف مزاحمت کی گئی اور جھڑپ کے دوران 6 پولیس اہلکار زخمی ہو گئے۔ دوسری جا نب پولیس نے ریڈ زون جانے کی کوشش پر 20ینگ ڈاکٹرز کو گرفتار کر لیا اور انہیں ریڈ زون جانے سے روک دیا جس پر ینگ ڈاکٹرز اور ریلی میں شریک پیرا میڈیکل اسٹاف نے انسکمب روڈ پر ہی دھرنا دے دیا۔ پو لیس کا کہنا ہے کہ ڈاکٹرز کی جا نب سے ان کے 6ساتھیوں کو بھی زخمی کر دیا گیا ہے ترجمان وائی ڈی اے کی جا نب سے وٹ سوشل میڈیا پر آ نے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ پو لیس کی جا نب سے تشدد کے باعث ان کے 10ڈاکٹرز و پیرا میڈیکس ساتھی زخمی ہو گئے ہیں جن میں سے بعض کی مرحم پٹی اور اس کے بعد کی تصاویربھی سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کر دی گئی ہیں۔۔خیال رہے کہ ینگ ڈاکٹرز مطالبات کے حق میں گزشتہ ڈیڑھ ماہ سے زائد عرصہ سے ہڑتال پر ہیں جس کی وجہ سے عوام اوع مریضوں کو سخت مشکلات کا سامنا کر نا پڑ رہا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں