ہمیں اپنے سمندری جہازوں کی محنت اور قربانیوں کو تسلیم کرنیکی ضرورت ہے، فیصل سبزواری

اسلام آباد (انتخاب نیوز) وفاقی وزیر برائے سمندری امور سینیٹر سید فیصل علی سبزواری نے کہاہے کہ عالمی معیشت میں اہم کردار اد کرنے والے پاکستان اور دنیا بھر کے سمندری ملاحوں اور کارکنوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔اپنے بیان میں انہوں نے سمندری ملاحوں اور کارکنوں کے منائے جانے والے دن کے موقع پر اپنے پیغام میں سمندری ملاحوں اور کارکنوں کی اہمیت پر زور دیا کیونکہ یہ سمندری جہاز قومی اور بین الاقوامی تجارت اور معیشت دونوں میں قابل قدر شراکت کو تسلیم کرنے کے لیے منایا جاتا ہے، جو اکثراپنے خاندانوں سے دوری کی بڑی قیمت پر ادا کرتے ہیں۔وفاقی وزیر برائے بحری امور نے کہا کہ جہاز رانی سے مختلف اشیاء اور سازوسامان کے موثر طویل فاصلے تک نقل و حمل سستے داموں ہوتی ہے اس لئے جہاز رانی کی صلاحیت اسے عالمی معیشت کے مرکز میں رکھتی ہے اور یہ بحری جہاز وں کے ہنر مند کارکنوں اور سمندری ملاحوں کے بغیر نہیں ہو سکتا۔ اس لیے بحری جہازوں کی اہمیت کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا کیونکہ وہی عالمی معیشت کو چلاتے ہیں۔وفاقی وزیر نے پاکستان کے بحری جہازوں کی خدمات کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں اپنے سمندری جہازوں کی محنت اور قربانیوں کو تسلیم کرنے کی ضرورت ہے جو کہ قومی معیشت میں بہت زیادہ حصہ ڈالتے ہیں اور اس طرح ملک کو خوراک، ایندھن، خام مال اور تیار شدہ سامان سمیت ضروری اور بنیادی دونوں چیزیں فراہم کرتے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ عالمی وبا کے دوران ان کی غیر معمولی شراکت کو بھی نظرانداز نہیں کیا جا سکتا۔ بحری جہازوں کے بغیر، ملک بھوکا رہے گا اور کام نہیں کر سکے گا۔وزیر برائے سمندری امور نے کہاکہ 2011 سے یہ دن پوری عالمی برادری میں سمندری جہازوں کے تعاون کو اجاگر کرنے کے لیے دنیا بھر میں منایا جا رہا ہے۔ انٹرنیشنل میری ٹائم آرگنائزیشن (آئی ایم او) کی جانب سے اس سال یہ دن بندرگاہ سے سمندری سفر اور بحری سفر کے مرکزی موضوع کے تحت منایاجا رہا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں