پنجگور میں سرکاری افسران انتظامی امور چھوڑ کر کراچی میں سیاسی منڈی لگائے بیٹھے ہیں، ترجمان نیشنل پارٹی

پنجگور :نیشنل پارٹی ضلع پنجگور کے ترجمان نے کہاکہ پنجگور میں انتظامی امور مفلوج اور تمام سرکاری ادارے اور دفتاتر بند ہوکر عوام کی خدمت اور سہولت فراہم کرنے کے بجائے عوام کو بے یار ومددگار چھوڈ کر کراچی میں ایک سیاسی جماعت اور انکی اکلوتا قائد کی آخری رسومات ادا کرنے کے لئے چلے گئے ہیں اور بلوچستان کے فرزندوں کیلئے بنائے گئے منڈی کا کریڈیٹ حاصل کرنے کی کوشش کررہے ہیں بلوچستان صوبائی حکومت میں شامل وزیراعلیٰ سے لیکر تمام وزراءاپنے تمام تر زمہ داریاں چھوڑ کر سردیوں کے موسم میں موسمی پرندوں کی طرح کراچی یا اندرونی سندھ اپنے ٹھکانے ڈھونڈ رہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ پچھلے سال کے صوبائی بجٹ کی پوری رقوم نکال کر کھاو پیو ہضم کرو کی فارمولے پر حیش عشرت کررہے ہیں جس سے ضلع پنجگور میں انتظامی امور ٹھپ ہوکر چلانے کے لئے کوئی بھی زمہ دار آفیسر ڈیوٹی پر موجود نہیں ہیں جس سے پتہ چلتا ہے کہ انتظامی افسران ریاست پاکستان کے ملازم نہیں بلکہ کسی بادشاہ سلامت کے زاتی ملازم ہیں ۔ترجمان نے کہا کہ پنجگور میں ہسپتال بند دوائیاں ناپید بجلی کا نظام درہم برہم موصلاتی نظام جام تعلیمی ادارے مفلوج پبلک ہیلتھ کا نظام ناکارہ ضلعی انتظامی کا پورا سسٹم بارڈر پر بھتہ وصولی کے علاوہ کچھ نظر نہیں آتا اسسٹنٹ کمشنر سے لیکر تحصیلدار تک اپنے دفتروں میں موجود نہیں رہتے ہیں نائب تحصیلدار کا 2018 سے لیکر اب تک تمام عہدے خالی ہیں کوئی بھی مسئلہ حل کرنے کی زمہ داری لینے والا آفیسران اپنے منصب پر دستیاب نہیں ہے عوام سرگرداں ہیں اپنے روزمرہ سرکاری امور نمٹانے میں پریشانی کی حالت میں مایوس ہو کر لوٹ جاتے ہیں عوام کی خواہشات کے برعکس ضلعی انتظامیہ اور دیگر آفیسران اپنے فرض منصبی سے غائب ہیں اور کسی بیمار سیاسی لیڈر کو اکسیجن فراہم کرنے میں لگے ہوئے ہیں پچھلے ساڑھے چار سالوں سے عوام اس مہنگائی کی چکی میں پھیس رہے ہیں لیکن عوام کی حالت زار ہر رحم کرنے کے بجائے ہر ایک اپنی روزی اور منصب کو بچانے کی فکر میں لگے رہتے ہیں پنجگور کے انتظامی سربراہاں نے گزشتہ چار سالوں میں کھبی بھی مارکیٹوں اور بازاروں میں کوئی بھی نرخ بندی نہیں کیا گیا ہے جس سے عوام کو کوئی ریلیف مل سکے ۔ترجمان نے کہا کہ جس طرح بلوچستان حکومت لاپرواہی اور نالائقی سے پورا بلوچستان بیپاریوں کی منڈی میں تبدیل ہوگیا ہے اسی طرح ضلع پنجگور کے انتظامیہ کی حالات صرف ایک شخص کیلئے منڈی میں تبدیل ہوگیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں