نکی ہیلی امریکی صدارتی انتخاب کیلئے ڈونلڈ ٹرمپ کی حریف بن گئیں

واشنگٹن :امریکا کی ریاست جنوبی کیرولائنا کی سابق گورنر نِکی ہیلی 2024 میں ہونے والے صدارتی انتخابات کے لیے ری پبلکن پارٹی کی جانب سے نامزدگی حاصل کرنے کی دوڑ میں شامل ہوگئی ہیں۔ وہ ممکنہ طورپر سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے مدمقابل ہوں گی۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ہیلی کی ٹیم کی جانب سے ای میل کے ذریعے بھیجی گئی ویڈیومیں کہا گیا کہ میں نِکی ہیلی ہوں اور میں صدارتی انتخابات میں حصہ لے رہی ہوں۔جنوبی کیرولائنا کی سابق گورنرکے علاوہ اقوام متحدہ میں سابق صدرٹرمپ کی امریکی سفیر کے طور پر خدمات انجام دینے والی ہیلی چارلسٹن،جنوبی کیرولائنا میں ایک تقریر میں اپنی انتخابی مہم کے منصوبوں کے بارے میں بتائیں گی۔وہ ری پبلکن پارٹی کی جانب سے امریکا کے صدارتی انتخابات میں امیدوار بننے کے لیے ڈونلڈ ٹرمپ کی براہ راست حریف بن گئی ہیں۔2024 میں ہونے والے صدارتی انتخابات میں حصہ لینے والے دیگر ہائی پروفائل ری پبلکن ارکان میں فلوریڈا کے گورنر ران ڈی سینٹس، سابق نائب صدر مائیک پینس، جنوبی کیرولائنا سے امریکی سینیٹر ٹم اسکاٹ، نیو ہیمپشائر کے گورنر کرس سونونواور آرکنساس کے سابق گورنرآسا ہچنسن شامل ہیں۔نِکی ہیلی نے اپنی ویڈیو میں کہاکہ یہ وقت نئی نسل کی قیادت کے لیے ہے کہ وہ مالی ذمہ داریوں کو دوبارہ تلاش کرے، اپنی سرحدوں کو محفوظ بنائے اور اپنے ملک، اپنے فخر اور اپنے مقصد کوپختہ بنائے۔انھوں نے اپنی خارجہ پالیسی کے تجربے کا بھی ذکر کیا اور کہا کہ چین اور روس آگے بڑھ رہے ہیں۔ وہ سبھی سوچتے ہیں کہ ہمیں ڈرایا دھمکایا جاسکتا ہے، لاٹھی ماری جا سکتی ہے۔ آپ کو میرے بارے میں یہ جاننا چاہیے:میں غنڈہ گردی برداشت نہیں کرتی اور جب آپ پیچھے ہٹتے ہیں، تو اگر آپ اونچی ایڑی پہنتے ہیں توپھرپاں کوزیادہ تکلیف ہوتی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں