وفاقی بجٹ میں خالص ٹیکس وصولیوں کا ہدف 5829ارب روپے مقررکرنیکا فیصلہ

اسلام آباد:وفاقی حکومت نے آئندہ مالی سال 2021-22 کے بجٹ میں خالص ٹیکس وصولیوں کا ہدف 5829 ارب روپے مقرر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔میڈیا رپورٹ کے مطابق وفاقی حکومت نے آئندہ مالی سال 2021-22 کے وفاقی بجٹ میں خالص ٹیکس وصولیوں کا ہدف 24 فیصد گروتھ کے ساتھ 5829 ارب روپے مقرر کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس میں سے براہ راست ٹیکس(انکم ٹیکس)وصولیوں کا ہدف 2182 ارب روپے اور ان ڈائریکٹ ٹیکسوں میں سے سیلز ٹیکس کی مد میں وصولیوں کا ہدف 2506 ارب روپے، فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا ہدف 356 ارب روپے، کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا ہدف 785 ارب روپے مقرر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔دستیاب دستاویز کے مطابق آئندہ مالی سال 2021-22 کے وفاقی بجٹ میں انکم ٹیکس وصولیوں کیلئے گروتھ کا ہدف 22 فیصد، سیلز ٹیکس وصولیوں میں گروتھ کا ہدف 30 فیصد، فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں گروتھ کا ہدف 29 فیصد جبکہ کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں گروتھ کا ہدف 12.1 فیصد مقرر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔دستاویز کے مطابق اگلے مالی سال کے وفاقی بجٹ میں سیلز ٹیکس وصولیوں کیلئے مقرر کردہ 2506 ارب روپے کا ہدف حاصل کرنے کیلئے اشیاء پر سیلز ٹیکس کی مد میں مجموعی طور پر 2503 ارب39 کروڑ روپے وصول کرنے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے، جبکہ سروسز پر سیلز ٹیکس وصولیوں کا ہدف2 ارب61 کروڑروپے مقرر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا مقرر کردہ 356 ارب روپے کا ہدف حاصل کرنے کیلئے اگلے بجٹ میں بیوریجز سیکٹر سے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا ہدف 5 ارب 13کروڑ 50لاکھ روپے، بیوریجز کنسٹریٹ سیکٹر سے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا ہدف 33 ارب 64 کروڑ 60 لاکھ روپے، سیمنٹ سیکٹر سے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا ہدف ایک کھرب 2 ارب41 کروڑ 50لاکھ روپے، سگریٹ اور ٹوبیکو سیکٹر سے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا ہدف ایک کھرب 34 ارب 54 کروڑ 10لاکھ روپے، قدرتی گیس سیکٹر سے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا ہدف 11 ارب97 کروڑ20 لاکھ روپے مقرر کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں