ریکوڈک کی خفیہ سودا بازی، سلیکٹڈ صوبائی حکمرانوں کی نیت ٹھیک نہیں، حاجی فدا حسین دشتی

مستونگ: نیشنل پارٹی کے مرکزی فنانس سیکرٹری حاجی فدا حسین دشتی اور مرکزی رہنماء سابق صوبائی صدر میر عبدالخالق بلوچ نے کہا ہے کہ ریکوڈک کی خفیہ سودا بازی کسی صورت قبول نہیں سلیکٹڈ صوبائی حکمرانوں کی اس حوالے سے نیت ٹھیک نہیں بلوچ قوم کی مرضی کے بغیر ریکوڈک کا معاہدہ کیا تو نیشنل پارٹی بھرپور احتجاجی تحریک چلائے گی بلوچستان بھر میں نیشنل پارٹی کی عوامی مقبولیت میں اضافہ مخالفین کو ہضم نہیں ہورہی ہے نیپ کے بعد صوبے کے عوام کی امیدیں نیشنل پارٹی پر مرکوز ہیں ٹھپہ مافیا کا دور ختم ہوچکا اب عوامی فیصلے کو کوئی نہیں روک سکتا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز مستونگ کے دورہ کے موقع پر نیشنل پارٹی مستونگ کے ضلعی قیادت، صوبائی ورکنگ کمیٹی کے ممبران اور تحصیل عہدیداران سے ضلعی صدر حاجی نذیر سرپرہ کی رہائشگاہ میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر صوبائی ورکنگ کمیٹی کے اراکین نواز بلوچ، نثار مشوانی، ضلعی جنرل سیکرٹری سجاد دہوار، ڈپٹی جنرل سیکرٹری محمد گل شاہوانی، لیبر سیکرٹری حاجی نذیر بگٹی، تحصیل مستونگ کے صدر میراحمد بلوچ، کھڈکوچہ کے جنرل سیکرٹری وزیرخان شاہوانی، حاجی پسند خان شاہوانی، ظفر بلوچ موجود تھے۔انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے ساحل وسائل کو لوٹنے کی جو سازشیں نیشنل اور انٹر نیشنل سطح پر ہورہی ہیں ان کو ناکام بنانے کے لیے ضروری ہے کہ عوام کو نیشنل پارٹی کے جھنڈے تلے متحد کرنا ہوگا کیونکہ جب ہم نیشنل پارٹی کو بلوچستان کا قومی پارٹی بنانے میں کامیاب ہوئے تو پھر ہم ان سازشوں کو ناکام بھی کرسکیں گے اور بلوچستان سے پسماندگی اور محکومی کو بھی ختم کرسکیں گے۔ اس وقت بلوچستان اپنے وسائل اور ساحل کے اعتبار سے دنیا کے امیرترین خطوں میں شامل ہے لیکن یہاں کے عوام کی 83 فیصد آبادی سطح غربت سے نیچے زندگی گزارنے پر مجبور ہیں نیشنل پارٹی کے عہدیداروں اور ورکروں کے کندھوں پر بھاری ذمہ داری ہے کہ وہ بلوچستان کے عوام کو نیشنل پارٹی کے پلیٹ فارم پر متحد کرنے کے لئے اپنے تمام تر صلاحیتوں کو بروئے کا لاکر دن رات محنت کریں انہوں نے کہا کہ آنے والا دور انشاء اللہ نیشنل پارٹی کا ہے اور عوامی طاقت سے بھرپور کامیابی حاصل کریں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں