گوادر، ماہی گیری کشتیوں کے سالانہ فیس میں اضافہ، ماہی گیروں کا احتجاج

گوادر: ماہی گیری کشتیوں کے سالانہ لائسنس فیس میں اضافہ کردیاگیا،بڑی لانچیں پانچ لاکھ جبکہ پچاس فٹ کی لانچیں تین لاکھ اور چھوٹی کشتیوں کے لیئے پچیس ہزارروپے سالانہ لائسنس فیس کا نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا،ماہی گیروں کا شدید احتجاج،سال میں اتنا کماتے نہیں جتنافیس بھرنے کا کہا جاتا ہے نوٹیفکیشن فوری منسوخ کردینے کا مطالبہ تفصیلات کے مطابق حکومت بلوچستان اور کوسٹل ڈولپمنٹ اینڈ فشریزڈیپارٹمنٹ نے ماہی گیری کشتیوں کے سالانہ لائسنس فیس میں بے تحاشا اضافہ کردیا ہے سالانہ فیس بڑھانے کا نوٹیفکیشن بھی جاری کردیاگیا ہے جس میں بیس فٹ کی چھوٹی کشتی کے لئے پچیس ہزارروپے،تیس فٹ کے درمیانی کشتی کے لیئے پینتیس ہزارروپے چالیس فٹ کی لانچ کے لیئے 75ہزارروپے پچاس فٹ کی لانچ کے لئے تین لاکھ اور پچاس فٹ سے بڑی لانچ کے لیئے پانچ لاکھ روپے سالانہ لائسنس فیس لینے کا حکم جاری کیا گیا ہے،صوبائی حکومت کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کو ماہی گیروں نے یکسر مسترد کردیا اور کہا ہے کہ وہ سالانہ اتنا کماتے نہیں ہیں جتنا انہیں فیس بھرنے کا کہا جاتا ہے انہوں نے کہاکہ محکمہ فشریز ماہی گیروں کو کوئی سہولیات مہیا نہیں کرتا اور نہ ہی غیرقانونی ٹرالنگ کے خاتمے کے لیئے کوشاں ہے لیکن اس کے باوجود بھاری لائسنس فیس لینا ماہی گیر کش پالیسی ہے جسے کسی بھی صورت قبول نہیں کیاجائے گا۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں