گیس قیمتوں میں ہوشربا اضافہ، نان بائیوں کا روٹی کی قیمت بڑھانے کا عندیہ

اسلام آباد (انتخاب نیوز) حکومت کی جانب سے گیس قیمتوں میں اچانک اضافے نے عوام کو حیران و پریشان کر دیا ۔ فیصلے پر شدید مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے عوام کا کہنا تھا حکومت آئی ایم ایف کے دباﺅ میں آ کر دو وقت کی روٹی چھیننے کے درپے ہے۔واضح رہے کہ حکومت نے دو روز قبل مختلف سیکٹرز کے لئے گیس کی قیمتوں میں 16سے 124فیصد اضافے کا اعلان کیا تھا جس کا مقصد ذرائع کے مطابق آئی ایم ایف کی کڑی شرائط پر عمل در آمد ہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق گیس کمپنیوں کو چھ ماہ میں تین سو دس ارب روپے کا ریوینیو حاصل کرنا ہو گا۔فیصلے پر ردعمل دیتے ہوئے عوام کا کہنا تھا اول تو گیس دستیاب ہی نہیں اور اگر دستیاب ہے تو حکومت آئے روز قیمتوں میں اضافہ کر کے اسے عام آدمی کے لیے نا قابل استعمال بنا رہی ہے۔عوام کا کہنا تھا گیس کی عدم دستیابی اور قیمتوں میں ہوشربا اضافوں کے باعث شہری کمرشل سلینڈرز استعمال کرنے پر مجبور ہیں جو کہ اب قوت خرید سے باہر ہو رہے ہیں۔دوسری طرف نان بائیوں نے گیس اور آٹے کی قیمتوں میں اضافوں کے سبب روٹی کی قیمت مزید مہنگی ہونے کا عندیہ دیدیا ۔ اسلام آباد کی آبپارہ مارکیٹ کے ایک نان بائی کا کہنا تھا گیس کی قیمت اور آٹے کی عدم دستیابی کے باعث لازمی طور پہ روٹی کی قیمت میں اضافہ ہو گا جس کا بوجھ عام آدمی پر پڑے گا’واضح رہے کہ حکومت پاکستان اور آءایم ایف کے درمیان ہونے والے مذاکرات تعطل کا شکار تھے۔ حکومت بارہا اس بات کا اظہار کر چکی ہے کہ عالمی مالیاتی ادارہ بہت سخت اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کر رہا ہے تاہم اب حکومت کے پاس کوئی دوسرا راستہ نہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں