وجہ کیا ہے کہ سردار عبدالرحمن کھیتران 20 سالوں سے بہبود آبادے کے وزیر ہیں؟ قدوس بزنجو کا جام کمال سے استفسار

کوئٹہ؛ بلوچستان اسمبلی کے بجٹ سیشن کے دوران اکثر اراکین کی غیر دلچسپی اہم نوعیت کی تحاریک پیش ہونے کے موقع پرآپس میں گپ شپ کرتے رہے وزیراعلیٰ جام کمال کی اراکین کو سنجیدگی کامظاہرہ کرنے کی تاکید کی کہ ایوان میں پیزا ،شادی اور غیر ضروری باتیں نہیں ہونی چاہیے اس سے اچھا تاثر نہیں جائے گاگزشتہ روز بلوچستان اسمبلی کے اجلاس کے دوران حکومتی اور اپوزیشن اراکین کی جانب سے ایجنڈے سے ہٹ کر گپ شپ کرنے کے موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے وزیراعلیٰ بلوچستان نے کہا کہ مطالبات زر اور تخفیف زر کی تحاریک کو اہمیت کا حامل قرار دیتے ہوئے کہا کہ موضوع سے ہٹ کر بات کرنے کی بجائے مطالبات زر پر بات کی جائے اپوزیشن اراکین اپنے تجاویز دیں یہ ایوان ہے یہاں پیزا ،شادی اور غیر ضروری باتیں نہیں ہونی چاہیے اجلاس کے موقع پر اسپیکر بلوچستان اسمبلی میر عبدالقدوس بزنجو نے اپوزیشن اراکین سے مکالمہ کرتے ہوئے کہاکہ ایوان میں اپوزیشن اراکین کی عدم موجودگی ان کی غیر سنجیدگی کی عکاسی کرتاہے ٹی اے ڈی اے ،تنخواہیں لیتے اوردھرنا بھی دیتے ہیں مگرایوان میں نہیں آتے اپوزیشن بینچز پر بیٹھے اراکین اپوزیشن کردار ادا کرنے کی بجائے غیر حاضر ہے جبکہ حکومت کی فوری کابینہ موجود ہے اسپیکر نے وزیراعلیٰ جام کمال سے استفسار کیاکہ کیا وجہ ہے کہ صوبائی وزیر سردار عبدالرحمن کھیتران گزشتہ 20سالوں سے بہبود آبادی کے وزیر ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں