قومی اسمبلی،بلاول بھٹو زر داری نے ”دہشتگردی کا جویار ہے غدار ہے“کا نعرہ لگادیا

اسلام آباد: قومی اسمبلی میں پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئر مین بلاول بھٹو زر داری نے ”دہشتگردی کا جویار ہے غدار ہے“کا نعرہ لگادیا جبکہ اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی جانب سے فلور وفاقی وزیر مراد سعید کو دینے پر اپوزیشن نے واک آؤٹ کر دیا۔پیر کو اجلاس کے دوران اظہار خیال کرتے ہوئے بلاول بھٹو زر داری نے کہاکہ وزیر اعظم نے اسامہ بن لادن کو شہید قرار دے دیا،سانحہ کارساز سے لیکر محترمہ کی شہادت تک میں اسامہ بن لادن ملوث رہا،یہ وزیر اعظم محترمہ بے نظیر کو شہید نہیں کہتا اسامہ بن لادن کو شہید کہتا ہے۔ اس موقع پر بلاول بھٹو زر داری نے دہشتگردوں کا جو یار ہے غدار غدار ہے کے نعرے لگائے ۔ انہوں نے کہاکہ بینظیر بھٹو دہشت گردوں کا مقابلہ کرتے ہوئے شہید ہوئیں،یہ احسان اللہ احسان اور بیت اللہ محسود کو شہید کہہ سکتا ہے،بلاول بھٹو زرداری کے خطاب کے دوران ایوان میں شدید بے نظمی دیکھی گئی،اسپیکر ماحول بہتر رکھنے کی کوشش کرتے رہے۔بلاول بھٹو زرداری نے عمران خان کو بزدل وزیراعظم قرار دے دیا۔ اسپیکر نے کہاکہ کسی ایم این اے کے خلاف بھی ایسا لفظ مناسب نہیں ہے،بلاول صاحب آپ بزدل کا لفظ واپس لے لیں،وہ وزیراعظم پاکستان ہیں ایسا لفظ نہ بولیں۔ بلاول بھٹو زر داری نے کہاکہ جناب اسپیکر آپ کی صوبہ میں سب سے زیادہ دہشت گردی ہوئی لیکن آپ وزیراعظم کے الفاظ حزف نہیں کر رہے۔ اسد قیصر نے کہاکہ ہر رکن اور وزیر اعظم کے بارے میں غیر پارلیمانی الفاظ کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔بلاول بھٹو زرداری کی تقریر پر حکومت بینچوں نے احتجاج کیا،وزیر بحری امور علی وزیر اور وزیر امور کشمیر اپنی نشستوں پر کھڑے ہوگئے۔ بلاول بھٹو زر داری نے کہاکہ جس کا اپنا ادارہ کے پی ٹی وزیر کو کرپٹ کہے اس کو بٹھائیں، اسپیکر قومی اسمبلی نے تقریر کیلئے فلور مراد سعید کو دیدیا،پیپلز پارٹی کے اراکین نے پلے کارڈز لہرا دیئے، مراد سعید کو فلور دینے پر اپوزیشن نے ایوان سے واک آؤٹ کردیا۔بلاول بھٹو زر داری اور اپوزیشن ایوان سے چلی گئی،اپوزیشن کی طرف سے صرف عبدالقادر پٹیل ایوان میں موجود رہے۔اسپیکر قومی اسمبلی نے شاہ محمود قریشی کو اپوزیشن کو منانے کا ٹاسک دیدیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں