جب تک وزیراعلیٰ تھا ریکوڈیک پر سمجھوتہ نہیں کیا، جام کمال

کوئٹہ:سابق وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے کہاہے کہ صوبے حال احوال پر نہیں چلائی جاتی،جب تک وزیراعلیٰ تھا ریکوڈک سے متعلق کوئی فیصلہ ہوا نہ ہی طریقہ کار یا منصوبے کوحتمی شکل دیاگیابین الاقوامیع دالتوں اور ثالثی میں کیس ہارنے سے 6ارب کا جرمانہ ہواہے،تمام محکموں کی استعداد کار میں بہتری، بہتری اور آرام کے طریقہ کار میں بڑی سرمایہ کاری ہوئی ہے لیکن میں بجٹ کی پیروی، ترقیاتی کاموں، محکمانہ پیشرفت اور باقی حکمرانی کے طریقہ کار پر شاید ہی کوئی سرکاری میٹنگ ہوئی ہوگی۔ان خیالات کااظہار انہوں نے سماجی روابط کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں کیا۔ انہوں نے کہاکہ بالکل غلط معلومات ہے جب تک میں وزیراعلیٰ تھا تو ایسی کوئی حتمی شکل، طریقہ کار یا کوئی فیصلہ نہیں ہوا۔ ہم نے بی ایم ای سی اور بی ایم آر ایل کمپنیاں بنائیں جو کچھ بھی کیا جائے حتمی منظوری کے لیے کابینہ میں آئے گا اور اس کے بغیر کچھ نہیں ہوگا۔دوسری بات یہ کہ بین الاقوامی عدالتوں اور ثالثی میں کیس ہارنے سے جرمانہ 6 ارب کے قریب ہو گیا ہے۔ بجائے اس کے کہ بحث و مباحثہ کریں اور خود قیاس کریں، بہتر ہے کہ تمام لوگ بیٹھ کر دیکھیں کہ صوبے اور مجموعی طور پر ہم اسے یہاں سے کیسے لے سکتے ہیں۔الحمدللہ، ان 3 سالوں میں ہم نے بی ایم ای سی اور بی ایم آر ایل کمپنیوں کو تکنیکی، مالیاتی اور قانونی ٹیموں کے ساتھ قابل بنایا ہے اس حکومت کو بس تھوڑی سی کوشش کرنی ہے اور چیزوں کی منصوبہ بندی کرنی ہے سست، غیر سنجیدہ، کم ایگزیکٹو اور مناسب ذمہ داری کی فراہمی کو دیکھنا بدقسمتی ہے۔تمام محکموں کی استعداد کار میں بہتری، بہتری اور آرام کے طریقہ کار میں بڑی سرمایہ کاری ہوئی ہے لیکن میں بجٹ کی پیروی، ترقیاتی کاموں، محکمانہ پیشرفت اور باقی حکمرانی کے طریقہ کار پر شاید ہی کوئی سرکاری میٹنگ دیکھتا ہوں۔ صوبے حال احوال پر نہیں چلائی جاتی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں