سانحہ مری،وزیراعلی پنجاب نے تحقیقات کے لیے تین رکنی کمیٹی تشکیل دے دی

لاہور:وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے مری واقعہ کی تحقیقات کے لیے کمیٹی تشکیل دے دی ہے۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعلی پنجاب سردار عثمان بزدار نے مری میں پیش آنے والے سانحے کے بعد وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے ہنگامی اجلاس طلب کیا۔ اس اجلاس میں آئی جی پنجاب، چیف سیکرٹری اور ریسکیو اداروں کے اعلی حکام شریک ہوئے۔میڈیا ذرائع کے مطابق وزیراعلی پنجاب سردار عثمان بزدار نے مری واقعہ کی تحقیقات کے لیے تین رکنی کمیٹی بنانے کا حکم دیا۔ یہ کمیٹی آئندہ 72 گھنٹوں میں اس حوالے سے اپنی رپورٹ وزیراعلی پنجاب کو پیش کرے گی۔ ذرائع کا کہنا ہے لکہ کمیٹی میں پولیس اور انتظامیہ کے افسران شامل ہوں گے جن کے ناموں کا اعلان جلد کیا جائے گا۔کمیٹی اس بات کی تحقیقات کرے گی کہ مری میں جو موسم کی شدت تھی اس حوالیسے انتظامات کیے گئے؟ اگر انتظامات کیے گئے تو یہ واقعہ کیوں پیش آیا؟ اور جانوں کا ضیاع کیوں ہوا؟ اور اگر ریلیف آپریشن بروقت شروع کیا گیا تو اس میں کس حد تک انتظامی غفلت ہوئی۔واضح رہے کہ مری میں سیاحوں کی بڑی تعداد ویک اینڈ پر برفباری کا نظارہ کرنے پہنچی، جہاں ایک لاکھ سے زائد گاڑیاں مری اور گلیات میں داخل ہوئیں۔ ٹریفک کا نظام درہم برہم ہوگیا۔ فیملیز گاڑیوں میں محصور ہو کر رہ گئیں۔ شدید برفباری میں پھنسے سیاحوں کو نکالنے کیلئے آپریشن جاری ہے۔وزیر داخلہ شیخ رشید نے تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ملکہ کوہسار اور گلیات میں برفانی طوفان کے باعث 16 سے 19 افراد جاں بحق ہوئے، ایک ہزار سے زائد گاڑیاں ابھی تک پھنسی ہوئی ہے۔وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید مری اور گلیات میں پھنسے سیاحوں کی امداد کی مانیٹرنگ کے لئے مری پہنچے، جہاں انہوں نے اپنے ویڈیو پیغام میں کہا کہ پاک فوج کے 5 پیدل پلاٹون طلب کئے گئے ہیں، سیاحوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا جا رہا ہے، ایف سی اور رینجرز کو بھی امدادی سرگرمیوں کیلئے طلب کر لیا گیا ہے۔ دوسری جانب راولپنڈی ٹریفک پولیس کے مطابق مری کے تمام انٹری پوائنٹس پر سیاحوں کو روکنے کے لیے خصوصی پکٹس قائم کردیے گئے ہیں۔آگاہی اعلانات کے باوجود بڑی تعداد میں سیاح مری کے داخلی راستوں پر موجود ہیں۔ چیف ٹریفک آفیسر (سی ٹی او)راولپنڈی اضافی نفری کے ساتھ گزشتہ شام سیمری میں سیاحوں کو ریسکیو کرنے میں مصروف ہیں۔ سی ٹی او تیمور خان نے کہا کہ راولپنڈی ٹریفک پولیس تمام تر وسائل کو بروئے کار لا رہی ہے، مسلسل برفباری کی وجہ سے سڑکوں پر پھسلن ہے، برف جمنے سے ٹریفک کی روانی متاثر ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں