ایران میں مظاہروں کے دوران گرفتار درجنوں قیدی رہا ، ہائی پروفائل افراد بھی شامل

تہران : ایران میں زیر حراست لڑکی کی موت کے خلاف مظاہروں کے دوران گرفتار درجنوں قیدیوں کو رہا کر دیا گیا۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق کچھ روز پہلے ایرانی رہبر اعلی آیت اللہ خامنہ ای نے گرفتار ہزاروں مظاہرین کی معافی کا اعلان کیا تھا۔ رہا کیے جانے والوں میں زیر حراست ہائی پروفائل افراد بھی شامل ہیں۔جنہیں رہائی ملی ہے ان میں فلمساز محمد رسولوف، فرانسیسی ایرانی محقق فریبا عدیلخہ، کئی مشہور سماجی کارکن اور فوٹوگرافر نوشین جعفری شامل ہیں۔ناقدین کا کہنا ہے کہ قیدیوں کی معافی اور رہائی عوام میں حکومت مخالف تناو کو کم کرنے کی کوشش ہے۔ایران میں زیر حراست لڑکی کی موت کے خلاف ملک بھر میں عوامی احتجاج چار ماہ سے زیادہ جاری رہا۔ایران میں گذشتہ برس ستمبر میں اسکارف قوانین کی خلاف ورزی پر گرفتار 22 سالہ مہسا امینی پولیس کی حراست میں انتقال کر گئی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں