ٹھٹھہ میں کورونا کے پہلے کیس کی تصدیق، پورا گاؤں سیل کردیا گیا

ڈپٹی کمشنر ٹھٹھہ کے مطابق انتقال کرجانے والے شخص کی مقامی قبرستان میں کردی گئی ہے،سندھ کے شہر ٹھٹھہ میں بھی کورونا کا پہلا کیس سامنے آگیا جس کے بعد متعلقہ گاؤں کو سیل کردیا گیا۔ٹھٹھہ میں ایک شخص کے انتقال کے بعد ٹیسٹ رپورٹ سامنے آئی جس میں کورونا کی تصدیق ہوئی۔فوکل پرسن ڈاکٹر یحییٰ کے مطابق ٹھٹھہ کےگاؤں رمضان بروہی کے رہائشی مریض کے انتقال کے بعد ٹیسٹ رپورٹ مثبت آئی ہے اور یہ ٹھٹھہ میں کورونا کا پہلا کیس ہے۔ملک میں کورونا سے مزید 10 اموات، ہلاکتیں 117 ہوگئیں، مجموعی کیسز 6300 تک جا پہنچےڈاکٹر یحییٰ کے مطابق 60 سالہ مریض کو دل کے عارضے سمیت مختلف امراض لاحق تھے اور اسے 20 مارچ کو جناح اسپتال کراچی میں داخل کرایا گیا تھا، 13 اپریل کو مریض کا کورونا ٹیسٹ بھی کرایا گیا جس کی رپورٹ مثبت آئی ہے جب کہ مریض گذشتہ شب انتقال کرگیا۔ڈپٹی کمشنر ٹھٹھہ کے مطابق انتقال کرجانے والے شخص کی مقامی قبرستان میں تدفین کردی گئی ہے اور تدفین میں شریک اہل خانہ اور دیگر افراد کورونا ٹیسٹ کی رپورٹ سے لاعلم تھے ۔ڈپٹی کمشنر کا کہنا ہے کہ کورونا کی رپورٹ مثبت آنے پر گاؤں رمضان بروہی سیل کردیا گیا ہے اورگاؤں میں لوگوں کےداخلے اور باہر نکلنے پر پابندی لگادی گئی ہے۔انہوں نے مزید بتایا کہ 8سے 10گھروں پر مشتمل گاؤں کے لوگوں کے نمونے لیے جارہے ہیں اورانتقال اور تدفین کے موقع پر موجود افراد کی تفصیلات جمع کی جا رہی ہیں۔خیال رہے کہ سندھ بھر میں کورونا سے متاثرہ افراد کی تعداد 1668 ہوچکی ہے جن میں سے 41 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں