دریجی کی پہاڑی باریجہ قبیلہ کی حق ملکیت ہے ،بزور طاقت قبضہ کسی صورت قبول نہیں کریں گے، باریجہ قومی اتحاد

خضدار(بیورورپورٹ) آل پاکستان باریجہ قومی اتحاد کے مرکزی سیکرٹری جنرل ماسٹر عبدالغنی باریجہ مرکزی سیکرٹری اطلاعات غلام قادر باریجہ صوبائی صدر حاجی نذیر احمد باریجہ ضلعی صدر اسد اللہ باریجہ ضلعی صدر جھل مگسی رئیس بلاول باریجہ ضلعی رہنما جھل مگسی سوڈل خان باریجہ ودیگر عہدداروں و باریجہ قبائلی متعبرین نےکہا ہے کہ دریجی میں سرداربھوتانی اور باریجہ قبیلہ کے پہاڑی پر ناجائز قبضہ جما بیٹھا ہے عدالت نے باریجہ قبیلہ کے حق میں فیصلہ دیا ہے اس کے باوجود ثالثین کی موجودگی میں ہم کسی بھی جگہ مخالفین سے بیٹھنے کو تیار ہے مگر انکی بزور طاقت قبضے کو کسی صورت قبول نہیں کرینگے اور حق کیلئے کسی بھی قربانی سے پیچھے نہیں ہٹھیں گے ان خیالات کا اظہار انہوں نے خضدار پریس کلب میں ایک پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا اس موقع پر باریجہ قبیلہ کے معتبرین و معززین بڑی تعداد میں موجود تھے۔ آل پاکستان باریجہ اتحاد کے مرکزی سیکرٹری جنرل ماسٹر عبدالغنی باریجہ و دیگر قبائلی متعبرین کا کہنا تھا کہ بحثیت ایک قبیلہ کے سربراہ سردار محمد صالح بھوتانی ہمارے لئے قابل احترام ہے ساتھ یہ بھی ضروری ہے کہ وہ باریجہ قبیلہ کے پہاڑی کو قبضہ کرنے سے اجتناب کریں جس پہاڑی پر سردار بھوتانی اور اس کے لوگ قابض ہوگئے ہیں یہ بنیادی طور پر باریجہ قبیلہ کا حق ملکیت ہے اور باریجہ قبائل کے حق میں معزز عدالت نے فیصلہ دے دیا ہے 23 سال تک پہاڑی پر باریجہ قبیلہ کے لوگوں نے مائننگ کی اوراس وقت سردار بھوتانی اقتدار میں تھے مگر وہ کیوں خاموش رہا اب جب وہ نشت ہار گئے تو انتقامی کاروائیوں پر اتر آئی ہے باریجہ قبیلہ کے پہاڑی میں کروڑوں مشینری ہیں اور تین سو سے زاہد افراد وہاں مزدوری کر رہے تھے پر قبضے سے کرڑوں روپے مشینری تباہ ہوگئی ہے تین سوسے زاہد مزدور بے روزگار ہو گئے ہیں ان تمام تر نقصانات اور معززعدالت کے فیصلوں کے باوجود ہم ثالثین کی موجودگی میں بیٹھنے کو تیار ہیں مگر شرط یہ ہے کہ مخالفین پہاڑی پر اپنی قبضے کو فلفورختم کردیں جب سردار بھوتانی اقتدار میں تھے آل پاکستان باریجہ قومی اتحاد کے چیئرمین جمیل احمد باریجہ کو گرفتار کروایا اس پر بے جامقدمات قائم کروائی اورانہیں جیل و زندانوں میں بند کر دیاگیا اب جب اقتدار کی سورج غروب ہوگئی ہے تو موصف نے قبائلی تنازعات کو پیدا کرنے اور دوسرے اقوام کی پہاڑی و زمینوں پر قبضہ کرنا شروع کیاہے ہم سمجھتے تھے کہ سردار بھوتانی تنازعات ختم کرینگے مگر ہمارا اندازہ غلط نکلا موصوف تنازعات پیدا کررہے ہیں ہم چیف آف جھالاوان نواب ثناء اللہ خان زہری, نواب محمد اسلم رئیسانی, نواب ذوالفقار مگسی, سردار اخترجان مینگل نواب محمد خان شاہوانی,سردار یار محمد رند قبائلی بوابوں سرداروں ودیگر قبائلی متعبرین سے پرزوراپیل کرتے ہیں کہ وہ اس معاملے میں درمیان میں آئیں اور پصوبائی حکومت بھی اس آگ کو بجھانے حق کو حقدار کے حوالے کرنے کےلئے اپنی زمہ داریاں پوری کریں باقی ہم وضاحت کرنا ضروری سمجھتے ہیں کہ ہمارا پوری قبیلہ سے کوئی تنازعہ نہیں ہے سب ہمارے لئے قابل احترام ہے ہم قابضین کے خلاف ہے ان سے باریجہ قبیلہ اپنے حق سے کسی صورت دستبردار نہیں ہوگی اور حق وملکیت کیلئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں