بلوچستان و سندھ میں گرد آلود طوفانی ہوائیں،دیواریں ار چھتیں گرنے سے 8افراد جاں بحق،

حب/ گڈانی/ اورماڑہ/ سونمیانی وندر / تربت/ گوادر (نمائندگان انتخاب+ بیورو رپورٹس) حب میں تیز طوفانی ہوائیں چلنے سے نظام زندگی مفلوج ہو کر رہ گیا،Kالیکٹرک کے کئی فیڈرٹرپ پورا شہر اندھیرے میں ڈوب گیا رات گئے جزوی طور پر بجلی بحال ہوسکی جبکہ طویل دورانیہ کے بریک ڈاؤن سے کاروباری سرگرمیاں ٹھپ ہو کر رہ گئیں Kالیکٹرک عملہ بجلی بحال میں مکمل طور پر ناکام دوسری جانب طوفانی ہوائیں چلنے سے حب شہر کے مختلف علاقوں میں درخت جڑ سے اُکھڑنے اور صنعتی ایریا میں بعض مقامات پر دیواریں گرنے کی اطلاعات موصول تاہم کسی جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی تفصیلات کے مطابق محکمہ موسمیات کی جانب سے بلوچستان کے مختلف علاقوں میں بارشوں اور 60سے70کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے طوفانی ہوائیں چلنے کی پیش گوئی کے بعد جمعہ کے روز کراچی سے ملحقہ بلوچستان کے صنعتی شہر حب،ساکران،پیرکس،بھوانی سمیت مضافاتی علاقوں میں طوفانی ہوائیں چلنے سے نظام زندگی مفلوج ہو کررہ گیا طوفانی ہوائیں چلنے سے Kالیکٹرک کے ناقص نیٹ کا پول بھی کھل کر سامنے آگیا کئی شہر وں میں کئی گھنٹے تک بجلی غائب رہنے سے پورا شہراندھیرے میں ڈوب گیا اور رات گئے جزوی طور پر بجلی بحال کی گئی شہر میں طویل دورانیہ بجلی بند ہونے کے سبب شہریوں کو پریشانی ومشکلات کا سامنا کرنا پڑا تو دوسری جانب کاروباری سرگرمیاں ٹھپ ہوکر رہ گئیں مزید برآں حب شہر اور قرب جوار کے علاقوں میں گزشتہ روز طوفاتی ہوائیں چلنے کے سبب حب کے مختلف علاقوں میں تناور درخت جڑ سے اکھڑ نے اور ہائیٹ ایریا میں چار دیواری زمین بوس ہونے کی اطلاعات موصول ہوئیں تاہم کسی جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی تیز طوفانی ہوائیں چلنے کے سبب نہ صرف شہری علاقوں میں بجلی کی فراہمی کا نظام مفلوج ہو ا ہے بلکہ کوئٹہ کراچی قومی شاہراہ پر سفر کرنے والوں کو بھی شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے قومی شاہراہ طوفانی ہواؤں کے سبب دھند چھاگئی جسکی وجہ سے حد نظر انتہائی محدود ہو کر رہ گئی اس دوران چھوٹی اور بڑی گاڑیوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا تاہم قومی شاہراہ پر دھند کے سبب ڈرائیور حضرات کو گائیڈ لائن دینے اور کسی حادثے کی صورت میں فوری امداد کی فراہمی کے حوالے سے موٹر وے پولیس کا بیلہ سے حب شہر تک کوئی کردار نظر نہیں آیا علاوہ ازیں طوفانی ہوائیں چلنے سے سردی کی شدت میں بھی اضافہ ہوا ہے طوفانی ہوائیں چلنے کے نتیجے میں ضلع لسبیلہ کے میدانی اور رتیلے علاقوں کے دیہی علاقوں کے مکینوں کو کھانا پکانے میں دشواریوں کا سامنا کرنا پڑا بتایا جاتا ہے کہ کئی دیہی علاقوں میں درجنوں جھونپڑیوں کی چھتیں اور دیواریں بھی اڑگئیں جسکی وجہ سے متاثرین کو کھلے آسمان تلے رات گزارنی پڑی۔ کراچی ابراہیم حیدری کی کشتی گڈانی کے کھلے سمندر میں انجن کی خرابی کے باعث تیز ہواؤں اور اونچی سمندری لہروں کی زد میں آگئی کشتی میں سوار 7 ماہی گیروں کو بچا لیا گیا کشتی کا انجن خراب ہونے سے لانچ بے قابو ہوکر گڈانی کے ساحل شپ بریکنگ یارڈ سے ٹکرا گئی لانچ کو دیکھ کر پلاٹ 122 کے عملے نے ہیوء مشینری کے زریعے لانچ کو ریسکیو کرلیا لانچ میں سوار 7 مائی گیروں کو باحفاظت بچا لیا گیا لانچ کے ناخدا نے بتایا کہ ان کی لانچ دودن سے انجن کی خرابی کے باعث سمندر کی بے رحم لہروں کا مقابلہ کرتی رہی عملہ اللہ سے دعائیں کرتا رہا لانچ سمندری تیز ہواؤں سے گڈانی کے ساحل سے ٹکرا گئی تمام عملہ محفوظ رہاعملے کا تعلق کراچی ابراہیم حیدری سے ہے گزشتہ روز چلنے والی تیز ہواؤں سے گوادر کے ساحل پر لنگر انداز کئی کشتیاں بھی ڈوب گئی ہیں جس سے مائی گیروں کو لاکھوں کا نقصان اٹھانا پڑ رہا ہے جبکہ گڈانی کے ماہی گیر نا مکمل جیٹی کی وجہ سے سخت پریشان ہے اور تیز ہواؤں اور موسم کی خرابی کی وجہ سے آئے روز ماہی گیروں کو لاکھوں روپے نقصان کا سامنا رہتا ہے جبکہ جمعہ کے روز تیز ہواؤں کے سبب گڈانی کے ماہی پریشانی کا شکار ہیں ضرورت اس امر کی ہے کہ گڈانی جیٹی کو ماہی گیروں کے لیے فعال کیا جائے تاکہ وہ اپنی کشتیاں محفوظ مقامات پر کھڑی کر سکے۔ اورماڑہ و گردنواح طوفانی ہواؤں شدید گروغبارکی لپیٹ میں،کوسٹل ہاء وے پرٹریفک کی روانی شدید متاثر، متعدددیہاتی علاقوں کے مکین گھروں میں محصورہوگئے سمندری لہریں خطرناک حدتک بھپر گتے اورماڑہ شہرمیں طوفانی ہواؤں اور شدید گردوغبارمیں وقتاًفوقتاً اضافہ ہوتاجارہاہے تیزوتند ہواؤں، گردوغبار اور مٹی کے طوفان سے کوسٹل ہاء وے پرٹریفک کا نظام شدیدمتاثر ہو کرڈرائیورحضرات اورمسافرمشکلات کا شکارہوگئے جبکہ بعض دیہاتی اور میدانی علاقوں میں بسنے والے گھروں میں محصور ہوکررہ گئے اورماڑہ میں بجلی نہ ہونے اور گردوغبار اور طوفانی ہواؤں سے کاروبارٹھپ ہوکررہ گیا۔ گہرے سمندر سے سونمیانی ہور میں داخل ہونے کی کوشش میں ڈھونڈہ کشتی الٹ کر ڈوب گئی ناخدہ اکبر بنگالی لاپتہ جبکہ تین ماہی گیروں تیر کر ساحل سمندر پر پہنچ گئے تفصیلات کیمطابق گزشتہ روز سونمیانی وندر کے ساحلی علاقے ڈام بندر سے کیکڑا کی شکار کیلیے جانے والی ڈھونڈہ کشتی جس میں فشریز کے عملے کیمطابق چار بنگالی ماہی گیر سوار تھے جو کہ جمعہ کی صبح کو سمندر کیلیے نکلے تھے گہرے سمندر سے واپسی کے وقت اچانک سمندری طوفانی ہوائیں شروع ہونے کی وجہ سے گہرے سمندر سے واپس آتے ہوئے سونمیانی ہور کے چینل میں اٹھنے والی طوفانی لہروں کی زد میں آکر ان کی ڈھونڈہ کشتی الٹ کر ڈوب گئی جس میں سوار چار ماہی گیروں جن میں ڈھونڈہ کشتی کا ناخدہ اکبر بنگالی نظام بنگالی جبکہ دودیگر ماہی گیر جن کے نام معلوم نہیں ہوسکے وہ ڈھونڈہ کشتی کے سمندر میں الٹ جانے کی وجہ سے ڈوبنے لگے جن میں سے تین ماہی گیر نظام بنگالی اور دو ماہی گیروں جن کے نام معلوم نہ ہوسکے انہوں نے تیر کر ساحل سمندر پر رسائی حاصل کی جبکہ ڈھونڈہ کشتی کا ناخدہ اکبر بنگالی نامی ماہی گیر تاحال لاپتہ ہے سمندر میں ڈھونڈہ کشتی کے ڈوبنے کی اطلاع موصول ہونے پر ڈائریکٹر فشریز لسبیلہ عبدالمالک نے اسسٹنٹ ڈائریکٹر فشریز عبدالرزاق انگاریہ کو فوری طور پر ساحلی علاقے ڈام بندر میں پہنچ کر ماہی گیروں کو ریسکیو کرکے کنارے پر لانے کی ہدایت جاری کی جس پر اسسٹنٹ ڈائریکٹر فشریز عبدالرزاق انگاریہ نے ڈام بندر پر پہنچ کر فشریز کے دیگر عملے کو ریڈ الرٹ کرکے ڈوبنے والی ڈھونڈہ کشتی کے لاپتہ ہونے ماہی گیراور دیگر تین ماہی گیروں کو ریسکیو کرنے کیلیے ڈام بندر میں موجود ہیں جبکہ طوفانی ہواؤں کے باعث پیدا ہونے والی سمندری لہریں ماہی گیروں کو ریسکیو کرنے کے عمل میں رکاوٹ بن رہی ہیں۔ تربت سمیت ضلع کیچ میں تیزگردآلود ہواؤں کی لپیٹ میں، معمولات زندگی بری طرح متاثر، جمعہ کی صبح سے تربت سمیت ضلع کیچ کے مختلف علاقوں میں تیز گردآلود ہوائیں چلنا شروع ہوگئے، گردآلود ہواؤں سے معمولات زندگی بری طرح متاثرہوگئے، گرد آلود ہواؤں کی وجہ شاہراہوں پر سفرمشکل ہوگیا اورحدنگاہ انتہائی کم رہی۔ گوادر سمیت مکران کے تینوں اضلاع پنجگور،کیچ تیز ہواؤں کی زد میں۔ مکران کوسٹل ہائی وے پر ٹریفک کی روانی متاثر۔گردآلود ہواؤں سے مسافروں کو شدید مشکلات کا سامنا۔تیز ہوا سے سمندر میں طغیانی اور لہروں میں شدت،سمندر کا پانی گردآلود و تیز سمندری لہروں سے ساحل پر لنگر انداز کشتیوں کو نقصان پہنچنے کا اندیشہ، طوفانیں ہوائیں چلنے سے شہر میں بجلی کے متعدد کمبے زمین بوس ہوگئے،متعدد سولرز بھی ہوائیں لے اْڑیں۔بجلی معطل بجلی کے متعدد کمبوں کے گرنے سے شہر کی بجلی معطل ہوگئے ہے، نلینٹ کے علاقے میں بھی تیز ہواؤں سے بجلی کے متعدد کمبے گر گئے۔بجلی معطل،شہر اور گردونواح میں صبح سے طوفانی ہوائیں چلنے کا سلسلہ جاری ہے۔ گوادر طوفانی ہواؤں کی لپیٹ میں۔ سمندر میں شدید طغیانی۔ کئی کشتیاں تباہ۔ گرد و غبار سے حد نگاہ صفر۔ بجلی کے متعدد کھمبے زمین بوس۔ تفصیلات کے مطابق گوادر شہر اور نواحی علاقے شدید طوفانی ہواؤں کی لپیٹ میں رہے۔ شمال مشرقی ہواؤں کا یہ سلسلہ جمعرات کی شب شروع ہوا اور تادم تحریر تیز ہواؤں کے چلنے کا سلسلہ جاری تھا۔ اب تک چلنے والی ہواؤں کے نتیجے میں گوادر شہر میں درجنوں کھمبے زمین بوس ہوگئے جس کی وجہ سے شہر کے آدھے حصے میں بجلی کی سپلائی منقطع ہوگئی ہے۔ متاثرہ علاقوں میں بجلی کی بحالی کے لئے کئی دن لگنے کا امکان ہے۔ تاہم طوفانی ہواؤں کے چلنے کے بعد گوادر کے سمندر میں طغیانی پیدا ہوگئی اور لہروں کی شدت میں اضافہ ہونے کی وجہ سے مغربی ساحل پر لنگر انداز کئی کشتیاں تباہ ہوگئی ہیں۔ طوفانی ہواؤں کے چلنے کے دوران فضاء بھی گرد وغبار کا شکار رہا جس کی وجہ سے شاہراؤں پر حد نگاہ صفر ہوگئی۔ دن بھر طوفانی ہوائیں چلنے کے باعث شہریوں کی روز مرہ کی معمولات متاثر ہوکر رہ گئے۔ محکمہ موسمیات نے آج بھی تیز ہواؤں کے چلنے کی پیشگوئی کی ہے۔
کراچی + اندرون سندھ (نمائندگان انتخاب+ نیوز ایجنسیاں) کراچی سمیت سندھ میں گرد آلود طوفانی ہواؤں کے باعث دیواریں گرنے اور چھتیں اڑنے کے واقعات میں 8 افراد جاں بحق جبکہ درجنوں زخمی ہوگئے۔ تفصیلات کے مطابق کراچی میں گردآلود طوفانی ہواؤں کے جھکڑ چلنے لگے، تیز ہواؤں کے باعث نارتھ ناظم آباداورگلبائی میں دیوار گرنے کے واقعات میں 8افراد جاں بحق ہوگئے۔کراچی کے علاقے اورنگی میں گھر کی دیوار گرگئی، جس سے چھ سالہ بچہ زخمی ہوا جبکہ نیوکراچی الیون بی میں زیرتعمیرعمارت کاحصہ گرگیا۔اسی طرح کراچی کے علاقے بلدیہ مواچھ گوٹھ میں گھر کی چھت گرنے سے خاتون سمیت3افرادزخمی اور سپارکو روڈ پر بھی مکان کی چھت گرنے سے 2افراد زخمی ہوئے۔گلشن اقبال میں تیز ہواؤں سے گھر کی چھتیں اڑگئیں جبکہ تیرہ ڈی میں درخت جڑ سے اکھڑ گیا۔دوسری جانب محکمہ موسمیات نے تیز ہواؤں کا الرٹ جاری کردیا ہے۔ ملک میں بارشوں کے بعد دیگر شہروں کی طرح سکھر میں بھی سرد ہواؤ ں کیساتھ سردی میں اضافہ ہو گیا ہے اوراس اضافے کیساتھ ہی گرم کپڑوں کی مانگ میں بے تحاشہ اضافہ ہونے کیساتھ شہر کی مارکیٹوں سمیت لنڈا بازار (امریکن بازار)میں گرم کپڑے خریدنے والوں کا رش بھی بڑھ گیا ہے۔ چیف میٹرولوجسٹ سردار سرفراز نے کہا ہے کہ کراچی میں (آج)ہفتہ سے سردی کی شدت میں اضافے کا امکان ہے، 27 جنوری تک شہر سردی کی لہر کی لپیٹ میں رہ سکتا ہے۔ ایک انٹرویومیں سردار سرفراز نے بتایا کہ آنے والی سردی کی لہر کے دوران رات میں درجہ حرارت8 سے 10 ڈگری سینٹی گریڈ تک گر سکتا ہے۔چیف میٹرولوجسٹ کے مطابق شہر میں سمندری ہوائیں 18 کلومیٹر فی گھنٹہ رفتار سے چل رہی ہیں، تیز ہوائیں 36 سے 45 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چل سکتی ہیں۔انہوں نے کہاکہ سمندری ہوائیں چلنے سے شہر کا مطلع جزوی ابرآلود رہے گا اور ہوا میں نمی کا تناسب زائد ہونے سے صبح کے وقت میں اوس بھی پڑے گی۔دوسری جانب محکمہ موسمیات نے بلوچستان میں موسم سے متعلق الرٹ جاری کر دیا ہے، ایک اور طاقتور سسٹم شمالی بلوچستان میں داخل ہوگیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں