بلوچستان تبلیغی جماعت کی مکمل حمایت کی قرار دار منظور

کوئٹہ:بلوچستان اسمبلی کے اجلاس میں تبلیغی جماعت کی اسلام کی سربلندی کے لئے انتھک کوششوں کو سراہتے ہوئے ان کی مکمل حمایت اور تائید کی قرار داد منظور کرلی گئی، منگل کو بلوچستان اسمبلی کے اجلاس میں سینئروزیر خزانہ حاجی نور محمد دمڑ نے قرار داد پیش کرتے ہوئے کہا کہ تبلیغی جماعت دنیا میں اسلام کی تبلیغ کا فریضہ سرانجام دینے والی منطم اور عالمی جماعت ہے۔ تبلیغ کا جو کام ہورہا ہے وہ قرآن و سنت کے عین مطابق ہے۔ مزید برآں تبلیغی جماعت کا دہشت گردی سے دور دور تک کوئی تعلق نہیں ہے۔ تاریخ گواہ ہے کہ یہ لوگ آج تک کبھی کسی ایسے کام میں ملوث نہیں رہے یہ تو اسلام اور امن کے سفیر ہیں اور پاکستان کے لئے قابل فخر اثاثہ ہے یہ ایسی جماعت ہے جس میں تمام طبقے کے لوگ شامل ہیں تبلیغ جماعت نے غریب اور امیر کالے اور گورے کی تفریق کو ختم کرکے بھائی چارے کا عملی ثبوت دیا ہے۔ ان کی کاوشوں سے پاکستان کا اسلام دوستی اور دہشت گردی کے خاتمے کا داعی ہونے واکا تشخص بلند ہوراہ ہے لہٰذا یہ ایوان تبلیغی جماعت کی اسلام کی سربلندی کے لئے انتھک کوششوں کو سراہتا ہے اور ان کی مکمل حمایت اور تائید کرتا ہے۔قرار داد کی موزونیت پر بات کرتے ہوئے حاجی نور محمد دمڑ نے کہا کہ تبلیغی جماعت پر پابندیاں قابل مذمت ہیں اس جماعت کا کوئی سیاسی ایجنڈا نہیں ہے یہ صرف اسلام کی تبلیغ اور سربلندی وپرچار کے لئے کام کررہی ہے اور یہ لوگ دنیا کے کونے کونے میں اسلام کی تبلیغ کاکام سرانجام دے رہے ہیں اس جماعت کی محنت کے نتیجے میں دنیا میں لاکھوں لوگ مسلمان ہوئے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ مغربی دنیا اس سے خوفزدہ ہے اور اس پر مختلف لیبل لگانے کی کوششیں کررہی ہے انہوں نے کہا کہ اس جماعت کا ہر رکن امن کا پیامبر ہے اس جماعت کا مشن اسلام کی تبلیغ کرنا ہے۔ قائد حزب اختلاف ملک سکندر ایڈووکیٹ نے قرار داد کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ تبلیغی جماعت کی کوششوں سے لاکھوں لوگ مشرف بہ اسلام ہوئے ہیں یہ لوگ اپنے خرچے پر سامان پیٹھ پر لاد کر اللہ کی راہ میں نکلے ہیں بھوک افلاس پیاس اور دیگر تکالیف برداشت کرتے ہیں ان کی کوششوں کے نتیجے میں ساری دنیا میں دین پھیل رہا ہے اب تمام ممالک مل کر بھی اس جماعت کے قدم نہیں روک سکتے اگر کہیں کوئی رکاوٹ حائل کی جائے تو ہمارا اسلامی فریضہ ہے کہ تبلیغی جماعت کا ساتھ دیں۔ انہوں نے تجویز دی کہ دعوت تبلیغ کاکام حکومتی سطح پر بھی کیا جائے۔ جے یوآئی کے رکن سید عزیزاللہ آغا نے کہا کہ تبلیغی جماعت ایک عالمگیر جماعت ہے اس پر پابندیاں قبول نہیں ہیں اپنے خون سے ہم اس جماعت کا دفاع کریں گے انہوں نے کہا کہ تبلیغی جماعت پر دہشت گردی کے الزامات لگانا اسلام کو بدنام کرنے کی عالمی سازشوں کی ایک کڑی ہے جے یوآئی کے میر زابد علی ریکی اور عبدالواحد صدیقی نے بھی قرار داد کی حمایت کی بعدازاں قرار داد متفقہ طو رپر منظور کرنے کر لی گئی، ا جلاس میں مشیر داخلہ نے بلوچستان لیٹرز آف ایڈمنسٹریشن اینڈ سکسیشن سرٹیفکیٹس کا مسودہ قانون مصدرہ2022(مسودہ قانون نمبر1مصدرہ2022ء) ایوان میں پیش کیا جسے ایوان کی متعلقہ کمیٹی کے سپرد کیاگیا قبل ازیں اجلاس میں جے یوآئی کے رکن اصغر علی ترین کا اساتذہ کی اپ گریڈیشن سے متعلق توجہ دلاؤ نوٹس مثبت حکومتی یقین دہانی پر نمٹادیا گیا جبکہ میر زابد علی ریکی کا محکمہ صحت سے متعلق توجہ دلاؤ نوٹس متعلقہ وزیر کی عدم موجودگی پر موخر کیا گیا۔ بعدازاں ڈپٹی سپیکر نے اجلاس جمعہ 21جنوری تک ملتوی کردیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں