آئی ایم ایف نے پاکستان کیلئے ایک ارب 38 کروڑڈالرزکی ریلیف پیکیج کی منظوری دیدی

کورونا وائرس سینمٹنیکی ریلیف پیکیج کی منظوری ایگزیکٹو بورڈ اجلاس میں دی گئی۔آئی ایم ایف اعلامیے کے مطابق کورونا وائرس کی باعث پاکستان کی معیشت شدید متاثر ہورہی ہے،کورونا سے نمٹنے کیلئے بیرونی فنانسنگ کی ضرورت ہے جس کے کیلئے آئی ایم ایف سپورٹ زرمبادلہ کیذخائرکوبہترکریگی۔آئی ایم ایف اعلامیے کے مطابق ریلیف پیکیج سے بجٹ کی ضروریات کوپورا کیا جاسکے گا،پاکستان نے صحت عامہ پراخراجات بڑھانیکااعلان کیا ہے،پاکستان یہ فنڈزکورونا کیاثرات سے نمٹنے کیلئے استعمال کرسکیگا۔پاکستان کوفنڈزریپڈ فنانسنگ انسٹرومنٹ کی مد میں جاری ہونگے، پاکستان توازن ادائیگی کیلئے ہنگامی ضروریات پوری کرسکے گا۔آئی ایم ایف کے مطابق کورونا کی وجہ سے معاشی صورت حال انتہائی غیر یقینی کا شکارہے، مالی سپورٹ سیزرمبادلہ ذخائرمیں کمی پرقابوپانے میں مدد ملیگی۔اعلامیے میں کہا گیا کہ آئی ایم ایف پاکستان کیساتھ قریبی رابطے میں ہے،کورونا کے اثرات کم ہوتے ہی مذاکرات دوبارہ شروع کی جائیں گے۔6 ارب ڈالرکے موجودہ ای ایف ایف پروگرام کیتحت بات چیت ہوگی،کورونا کی پاکستانی معیشت پرانتہائی اہم اثرات مرتب ہوئے ہیں،حکومت پاکستان نے کورونا وائرس کا پھیلاوروکنے کیلئے تیزی دے اقدامات کیے۔حکومت عوامی صحت پر اخراجات میں اضافہ کررہی ہے۔اس مقصد کیلئے معاشی پیکیج کا بھی اعلان کیاگیا۔
50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں