ترکیہ نے شمال مشرقی شام میں زمینی اور فضائی حملے تیز کردیے، 20 شامی فوج ہلاک، درجنوں زخمی

شام (مانیٹرنگ ڈیسک) شام کے سرکاری فوجیوں میں متاثرین کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے جب سے ترکی نے شمالی اور شمال مشرقی شام میں اپنی زمینی اور فضائی بمباری کو تیز کرنا شروع کیا ہے، ان حملوں کے بارے میں شامی حکومت کی طرف سے کوئی بیان یا سرکاری موقف سامنے نہیں آیا ہے۔ شمالی اور شمال مشرقی شام میں ترکی کی حالیہ بمباری میں اب تک 20 کے قریب شامی فوجی ہلاک اور ایک درجن زخمی ہو چکے ہیں۔ شامی ایوان صدر کے خصوصی مشیر بوتینہ شعبان نے کہا، ترک قبضہ شمال مغربی شام میں اپنی چھتری تلے سرگرم آزادی پسندوں کی موجودگی کو جواز فراہم کرنے کے لیے گھٹیا حیلے استعمال کررہا ہے۔ ترک حکومت روس کے ساتھ اپنے وعدوں کی پاسداری نہیں کرتی اور شام اور عراقی علاقوں میں اپنے عزائم کو عملی جامہ پہنانے کے لیے دلائل گھڑتی ہے۔ شعبان نے شمالی شام میں وسیع تر علاقوں کیخلاف ترکی کی طویل کارروائیوں کو نظر انداز کر دیا، جس میں درجنوں افراد ہلاک ہوئے اور اہم بنیادی ڈھانچے کو تباہ کر دیا۔ شمالی شام کیخلاف ترکی کی بمباری کے چوتھے دن کے موقع پر، ترک افواج نے توپ خانے اور 33 سے زیادہ فضائی حملوں کو نشانہ بنایا۔ زیادہ تر حملے شمال مشرقی شام کے شہر قمشلی کے مشرق میں آئل فیلڈز کو نشانہ بنایا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں