دینی مدارس کی آزادی اور خودمختاری کا ہر صورت دفاع کیا جائے گا،مفتی تقی عثمانی

کوئٹہ :وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے زیر اہتمام جامعہ امدادیہ کوئٹہ تقریب تقسیم انعامات و مدارس کنونشن منعقد ہوا۔ جس سے وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے صدر مفتی محمد تقی عثمانی، ناظم اعلیٰ قاری محمد حنیف جالندھری، سرپرست اعلیٰ مولانا سید عبد الستار شاہ، جے یوآئی کے مرکزی سیکرٹری جنرل سینیٹر مولانا عبد الغفورحیدری، صوبائی امیر مولانا عبد الواسع، وفاق المدارس سندھ کے ناظم مولانا امداد اللہ یوسف زئی، وفاق المدارس بلوچستان کے ناظم مولانا صلاح الدین ایوبی،قاری مہر اللہ، حافظ حسین احمد شرودی، مولانا داؤد شاہ اور مولانا محمد رمضان مینگل نے خطاب کیا۔ تقریب میں صوبہ بھر کے سینکڑوں مدارس و جامعات کے مہتممین واساتذہ کرم شریک ہوئے،اس موقع پر وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے تحت گزشتہ دو سالوں سے سالانہ امتحانات میں پوزیشن حاصل کرنے والے93طلبا وطالبات کو انعامات دئیے گئے اور بلوچستان 43مدارس وجامعات کے پوزیشن ہولڈر طلبا و طالبات کو نشان اعزاز سے نوازا گیا۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے صدر مفتی محمد تقی عثمانی نے کہا کہ دینی تعلیم کا مقصد ڈگری اور منصب کا حصول نہیں بلکہ اللہ تعالیٰ کی رضا اور خوشنودی کا حصول ہے، دینی مدارس کے خلاف ہر قسم کی سازشیں ناکام ہوں گی، حق وباطل کا یہ معرکہ ہمشہ سے چلا آرہا ہے،نصرت الہی ہمارے ساتھ شامل ہوگی،وفاق المدارس نعمت عظمیٰ ہے جس کی چھت تلے تمام مدارس متحد و متفق ہیں۔ انہوں نے ارباب مدارس و جامعات پر زور دیتے ہوئے کہا کہ وہ معیار تعلیم و تربیت کو بلند رکھنے کی ہر ممکن کوشش کریں،دشمن ہمارا کچھ نہیں بگاڑ سکے گا،اس وقت 23ہزار مدارس وفاق المدارس العربیہ پاکستان سے ملحق ہیں۔ناظم اعلیٰ وفاق المدارس العربیہ پاکستان قاری محمد حنیف جالندھری نے کہا کہ وفاق المدارس کے اکابرین کے اخلاص کا نتیجہ ہے کہ آج وفاق المدارس ایک تناور درخت کی شکل اختیار کر گیا ہے مدارس اور وفاق ہمارے لیئے ایک نعمت سے کم نہیں، مدارس دینیہ شرح خواندگی میں میں اضافہ کرتے ہوئے امن و آشتی کا درس دے رہے ہیں۔ وفاق المدارس سندھ کے ناظم مولانا امداد اللہ نے کہا کہ دینی مدارس اسلام کے قلعے ہیں جس کے ذریعے سے اللہ دین کی خدمت ہم سے کرارہے ہیں،تقریب سے صوبہ بلوچستان کے ناظم مولانا صلاح الدین ایوبی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مغربی دنیا نے دینی مدارس کو مٹانے کا تہییہ کررکھا ہے اور یہاں کہ غلامانہ ذہن رکھنے والوں اور برسر اقتدار رہنے والوں نے بھی اس میں کوئی کسر باقی نہیں چھوڑی ہے،لہذا ہمیں اتحاد و اتفاق اپنے اکابر پر اعتماد اور مدارس کے معاملات میں دیانت اور شفافیت کا اہتمام کرناچاہیے۔ جمعیت علماء اسلام پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل مولانا عبد الغفورحیدری نے کہا کہ جمعیت اور وفاق شانہ بشانہ مدارس کا دفاع کررہے ہیں، تمام سازشوں کو مشترکہ طور پر ناکام بنائیں گے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے جے یو آئی صوبہ بلوچستان کے امیر مولانا عبدالواسع نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس ملک کو حاصل کرنے اور اس کے مقاصد کی بقا کیلئے دینی مدارس اور اس کی خدمات پوری دنیا میں روز روشن کی طرح واضح ہے اور اس کی سالمیت کی بقا کیلئے مدارس کی خدمات کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہیں،تقریب سے سرپرست اعلی شیخ الحدیث والتفسیر مولانا سید عبدالستار شاہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان بننے کے بعد ملک کے اندر گنے چنے مدارس تھے اب وفاق المدارس کی برکت سے مدارس کی تعداد ہزاروں میں ہوگئی ہیں کہ دین دشمن قوتیں اب ان کا کچھ نہیں بگاڑ سکتی ہیں اور تقریب میں عاملہ اراکین مولانا عبدالمنان،مفتی حسین احمد،ضلعی مسؤلین مولانا مفتی حفیظ اللہ،مولانا عبدالرحمن رفیق،مولانا عطاء ا للہ،قاری غلام رسول،مرکزی دفتر کے مولانا عبدالمجید،چودھری ریاض عابد،مولانا عبدالمتین اور صوبہ بھر کے شیوخ الحدیث اور ممتاز علماء کرام کی بڑی تعداد میں شرکت کی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں