امریکا کے صدارتی انتخابات میں خون کی ندیاں بہہ سکتی ہیں، جوبائیڈن

واشنگٹن:امریکا میں ری پبلیکن پارٹی کی طرف سے متوقع صدارتی امیدوار جوبائیڈن نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ امریکا میں پرائمری صدارتی انتخابات خونی معرکے میں تبدیل ہوسکتے ہیں۔میڈیارپورٹس کے مطابق امریکی ریاست میری لینڈ فنڈ ریزنگ مہم کے دوران ڈیموکریٹک امیدوار بیرنی سینڈرز کی طرف سے کیے گئے تنقیدی حملوں پر سخت تشویش کا اظہار کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم اپنی پارٹی کو توڑ سکتے ہیں اور نہ ہی ٹرمپ کو دوبارہ صدر منتخب کرانے کا موقع دے سکتے ہیں۔ لگتا ہے کہ اب کی بار پرائمری انتخابات میں خون کی ندیاں بہہ سکتی ہیں۔خیال رہے کہ دونوں صدارتی امیدوار بیرنی سینڈرز اور جوبائیڈن منگل کے روز ایدھاو، مسی سیپی، میزوری، واشنگٹن، نارتھ ڈاکوٹا اور مشی گن میں انتخابی معرکہ ہونے جا رہا ہے تاہم مشن گن میں جوبائیڈن کی کامیابی سینڈرز کی امیدوں پرپانی پھیرسکتی ہے۔قبل ازیں 78 سالہ سینڈرز نومبر میں ہونے والے انتخابات میں ڈونلڈ ٹرمپ کیاہم حریف ہوسکتے ہیں۔ 29 فروری کو ساؤتھ کیرولینا میں جوبائیڈن کی کامیابی ڈیموکریٹک پارٹی کے اعتدال پسند بازو کو اگلے مراحل میں کامیابی کا اہم موقع فراہم کرسکتا ہے۔ کل ہفتے کو جوبائیڈن نے دعویٰ کیا تھا کہ انہیں میزروی ریاست میں 60 مزید ارکان کانگرس کی حمایت حاصل ہوگئی ہے۔چھ ریاست میں صرف میزوری ایک ایسی ریاست ہے جہاں منگل کے روز انتخابات ہوں گے۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں